بھارتی سرحدی خلاف ورزیوں پر حکومت کا کمزور احتجاج 18 کروڑ عوام کی توہین ہے

بھارتی سرحدی خلاف ورزیوں پر حکومت کا کمزور احتجاج 18 کروڑ عوام کی توہین ہے

وہاڑی (نمائندہ نوائے وقت) وہاڑی کے سیاسی و سماجی لوگوں نے انڈیا کی طرف سے آئے روز سرحدی خلاف ورزیوںاور پاک فوج کے جوانوں کو شہید کئے جانے اور حکومت پاکستان کے کمزور موقف پر گہری تشویش کا اظہار کی اہے ان حلقوں میں مرکزی انجمن تاجران کے صدر رانا عبدالعزیز نے کہا ہے کہ حکومت کا کمزور مو¿قف ایک بزدلانہ کاروائی ہے جس سے انڈیا جیسا مکار ملک قابو میں آنے والا نہیں اس لئے حکومت ٹھوس اور جرات مندانہ مو¿قف اختیار کرے آل پاکستان ٹریکٹر ڈیلرز کے صدر محمد سرور چوہدری نے کہا ہے کہ حکومت کا انڈیا کی تمام اشتعال انگیزیوں کے ےباوجود دوستانہ اور مفاہمانہ رویہ رکھنا اور ایک کمزور احتجاج کرنا اٹھارہ کروڑعوام کی توہین ہے ہماری فوج ،میزائل اور ایٹمی ٹیکنالوجی کس کام کی ہے اگر یہ دشمن کے خلاف استعمال نہیںکی جاسکتی تو پھر اسے کیوں حاصل کیا گیا انہوں نے کہا کہ پاک فوج کو سرحدوں پر الرٹ کر کے انہیں دشمن کی اشتعال انگیزیوں کا منہ توڑ جواب دے نواب عتیق خاں خاکوانی نے کہا ہے کہ حکومت اگر پہلے دن ہی ٹھوس مو¿قف اختیار کرتی تو آج ہمارا فوجی کیپٹن شہید نہ ہوتا حکومت کو جرات مندانہ اقدامات کرنے چاہئے 18کروڑ عوام آپ کے ساتھ ہیں وہ پاکستان پر کوئی آنچ نہیں آنے دیںگے میاں جہانزیب یوسف نے کہا ہے کہ حکومت کو انڈیا کے خلاف جنرل ایوب اور جنرل مشرف جیسا جرات مندانہ قدم اٹھانا چاہئے تاکہ انڈیا کو پاکستان کے خلاف کسی بھی اقدام کی جرات نہ ہو اے ڈی صابر نے کہا ہے کہ حکومت کی غیر سنجیدہ پالیسی کی بدولت پاکستان کی سلامتی کو خطرات بڑھ رہے ہیں اس لئے حکومت کو نڈیا کی صورتحال پر قوم کو اعتماد میں لینا ہوگامحمد طارق چوہدری نے کہا ہے کہ اگر حکومت انڈیا کے خلاف جرات مندانہ اقدام اورپاکستان کی حفاظت نہیں کر سکتی تو اٹھارہ کروڑ عوام کی توہین تونہ کرے حکومت انڈیا کے مسئلہ پر عوام کوا عتماد میں لے اگر ملک و قوم کو کوئی نقصان پہنچا تو عوام انہیں کبھی معاف نہیں کرے گی۔
کمزور احتجاج