ملک بچانے کیلئے میدان میں نکلا ہوں‘ لوٹ مار کا نظام بدلنا ہو گا: ڈاکٹر قدیر

ملک بچانے کیلئے میدان میں نکلا ہوں‘ لوٹ مار کا نظام بدلنا ہو گا: ڈاکٹر قدیر

ملتان (سپیشل رپورٹر) تحریک تحفظ پاکستان کے چیئرمین و معروف ایٹمی سائنسدان ڈاکٹر عبدالقدیر خان نے کہا ہے کہ آج ملکی حالات انتہائی نازک صورتحال سے دوچار ہیں۔ پہلے ایٹمی صلاحیت بنا کر ملک کی جغرافیائی سرحدوں کو مضبوط کیا آج سیاسی جماعت بنا کر ملک کی نظریاتی سرحدوں کی حفاظت کر رہا ہوں۔ بھٹو نے میرے خط پر مجھے بلا کر ایٹمی پروگرام شروع کیا جبک جنرل ضیاءاور اسحاق خان نے بھی ایٹمی پروگرام کو بھرپور تحفظ دیا۔ آج ہمارے ملک کی بنیادی اساس کو خطرہ لاحق ہے۔ ڈنکے کی چوٹ پر کہتا ہوں کہ پاکستان کا ایٹمی پروگرام خالصتاً اپنا ہے۔ میں نے کوئی بھی ایٹمی سامان چوری نہیں کیا پاکستان میں ہی تیار شدہ ایٹم بم اور میزائل یہیں کا ہے۔ آج اپوزیشن حکمرانوں کے ساتھ ملکر کرپٹ نظام کو تحفظ دے رہی ہے۔ ہمیں لوٹ مار کا یہ نظام بدلنا ہو گا۔ ان خیالات کا اظہار انہں نے گزشتہ روز ہائیکورٹ بار کے زیر اہتمام اپنے اعزاز میں منعقدہ تقریب سے خطاب کے دوران کیا۔ اس موقعہ پر انہوں نے مزید کہا کہ میں 92ءمیں ایک بار ملتان آیا تھا۔ یہاں کے شاندار استقبال کو میں نے آج بھی یاد رکھا ہوا ہے۔ یہاں کے عوام پیار کرنے والے اور میٹھے ہیں۔ آج ملتان کافی ترقی کر گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی صورتحال کافی نازک ہے۔ میں نے ملک کو 25 سال دئیے اور میزائل اور ایٹم بم بنایا۔ آج ملک کو بچانے کے لئے خود میدان میں آ گیا ہوں۔ آج ملک کو ٹوٹتے دیکھ کر دکھ ہوتا ہے۔ اس لئے میدان میں آیا ہوں کہ آنے والی نسل یہ نہ کہے کہ ڈاکٹر قدیر زندہ تھے مگر پھر بھی آرام کرتے رہے۔ انہوں نے کہا کہ جب میں یورپ کے مختلف ملکوں میں اعلیٰ نوکریاں کر رہا تھا تو اس وقت بھی ملک کی ”تڑپ“ میں واپس آ گیا۔ بھٹو نے میرے بھیجے گئے خط پر مجھے ملازمت دیدی۔ میں چھٹی پر پاکستان آیا ہوا تھا اور پھر یہیں کا ہو کر رہ گیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی ایٹم بم کے لئے میں یا کوئی بھی دوسرا شخص بیرون ملک سے مخصوص آلات چوری کر کے پاکستان نہیں لایا۔ یہاں بنایا گیا ایٹم بم اور میزائل خالصتاً پاکستانی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میں سیاست میں صرف اس لئے آیا ہوں کہ آج پاکستان کو بچانا ہے ہمیں جیالا اور متوالا ہو کر اب نہیں سوچنا ہو گا۔ ہمیں محب وطن پاکستانی بن کر سوچنا ہو گا۔ تحریک تحفظ پاکستان کے ارکان منتخب ہو کر پارلیمنٹ میں چیک اینڈ بیلنس کے نظام کو مضبوط بنائیں گے۔ آج اپوزیشن اور حکمران مل کر سب کھانے میں لگے ہوئے ہیں۔ آج جمہوریت کے نام پر ووٹ لیکر نمائندے ڈنکے کی چوٹ پر کہتے ہیں کہ ہمیں ووٹ ملا ہے اس لئے ہمیں صرف عوام یہ پوچھ سکتے ہیں۔ وہ یہ بھول جاتے ہیں کہ انہیں ووٹ کرپشن کرنے کے لئے نہیں دیا گیا ہے۔ انہیں امانت دار بنایا گیا ہے وہ خائن اور لٹیرے بن گئے ہیں۔ خدارا میری عوام سے بھی اپیل ہے کہ وہ ایسے امیدواروں کو آئندہ الیکشن میں ووٹ نہ ڈالیں اور آڑے ہاتھوں لیں۔ اس موقعہ پر صدر ہائیکورٹ بار محمود اشرف خان نے کہا کہ ملک کو تباہی سے بچانے کے لئے صاف ستھرے سیاست دانوں کو آگے لانا ہو گا۔ ملکی حالات کو موجودہ حکمرانوں نے تباہی کے دہانے پر پہنچا دیا ہے۔ جنرل سیکرٹری ہائیکورٹ بار سید جعفر طیار بخاری نے کہا کہ پاکستان کے ہونہار سپوت نے پاکستان کو محفوظ بنا دیا ہے۔ صدر ڈسٹرکٹ بار و جنرل سیکرٹری ڈسٹرکٹ بار ممتاز نور ٹانگرہ اور عمران رشید سلہری نے کہا کہ ان کا ملتان کی بار میں آنا خود بار کے لئے اعزاز ہے۔ اس موقعہ پر ہائیکورٹ و ڈسٹرکٹ بار کی جانب سے ڈاکٹر عبدالقدیر خان کو اعزازی شیلڈ و تحیات اعزازی ممبر شپ دی گئی۔
ڈاکٹر قدیر