آتش بازی کے سامان کی فروخت کیخلاف آپریشن سینئر پولیس آفیسر سے کرایا جائے

آتش بازی کے سامان کی فروخت کیخلاف آپریشن سینئر پولیس آفیسر سے کرایا جائے

ملتا ن(نامہ نگارخصوصی) ڈسٹرکٹ آفیسر کوآرڈی نیشن ملتان نوشین جمشید نے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ ضلع ملتان میں آتش بازی کے سامان کی تیاری اور فروخت کے خلاف آپریشن کے سو فیصد نتائج حاصل نہیں ہو رہے ہیںاور اس کی کامیابی میں مختلف مسائل کا سامنا ہے۔انہوں نے کہا کہ ضلعی انتظامیہ اور پولیس کی مشترکہ ٹیموں کے آپریشن کے وقت ” نامعلوم مخبر“ کی اطلاع پرآتش بازی کا سامان ایک گودام سے کسی دوسرے گودام میں شفٹ کردیا جاتا ہے۔ڈی اوسی نے کہا کہ آتش بازی کے سامان کی وجہ سے کسی حادثہ میں انسانی جانوں کے ضیاع کے خدشہ کے پیش نظرضروری ہے کہ کسی سینئر پولیس آفیسرکی قیادت میں آپریشن کامیاب بنایا جائے۔انہوں نے کہا کہ ڈی سی او سید گلزار حسین شاہ نے ایل پی جی ایک سلنڈر سے دوسرے سلنڈر میں احتیاطی تدابیر اختیار کئے بغیرمنتقل کرنے والوں دکانداروں کے خلاف ایکشن لینے کی ہدایات جاری کر دی ہیں۔وہ آتش بازی کا سامان فروخت کرنے والوں،غیر قانونی ایل پی جی دکانوں فیکٹریوں اور گراں فروشوں کے خلاف مہم شروع کرنے کے حوالے سے ایک اجلاس کی صدارت کر رہی تھیں۔اجلاس میں اسسٹنٹ کمشنرز ماحولیات اور سول ڈیفنس کے افسران نے شرکت کی۔ڈی اوسی نے کہا کہ ضلعی انتظامیہ کے مختلف اداروں نے رپورٹ دی ہے کہ تھانہ بوہڑ گیٹ،تھانہ حرم گیٹ اور تھانہ کپ کے علاقے کبوتر منڈی،ہنوں کا چھجہ،کپ بازار اور شجاع آباد میں ریلوے بازار میں آتش بازی کے زیر زمین گودام قائم کئے گئے ہیں۔