عمران اور قادری فوج کیخلاف گیم پلان کا حصہ بن گئے تھے: جاوید ہاشمی

عمران اور قادری فوج کیخلاف گیم پلان کا حصہ بن گئے تھے: جاوید ہاشمی

ملتان (سپیشل رپورٹر) سابق وفاقی وزیر و بزرگ سیاستدان مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا ہے کہ ماضی میں احتجاجی سیاست کی بجائے آئین‘ سیاست اور پارلیمان پر خود کش حملہ کی کوشش کی گئی مگر میں نے ان پر خود کش حملہ کر کے جمہوریت‘ آئین اور فوج کا دفاع کیا۔ عمران اور قادری ایسے گیم پلان کا حصہ بن گئے تھے جو فوج کے خلاف تھا۔ اس معاملہ کو فوجی کورٹس میں بھیجیں ثابت کر دونگا کہ ماضی میں فوج اور سویلین حکومت کے خلاف سازش کی گئی۔ سویلین اور فوج دونوں کو بچایا مگر اس احسان کا کسی سے بدلہ نہیں مانگا۔ ایئرپورٹ کو انٹرنیشنل ایئرپورٹ بنانے کا پہلا قدم میں نے 97ء میں اٹھایا تھا۔ سینٹ میں ہارس ٹریڈنگ افسوسناک ہے۔ عمران اور الطاف سے اپیل ہے کہ وہ سینٹ کو ملکر مضبوط بنائیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز اپنی رہائش گاہ پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر انہوں نے مزید کہا کہ موجودہ جمہوری نظام کو آئیڈیل نہیں کہا جا سکتا مگر اس کے متبادل کوئی اور نظام موجود نہیں ہے۔ سینٹ چیئرمین کے الیکشن کا بائیکاٹ کرنا کسی بھی سیاسی جماعت کا بہتر عمل نہیں ہے۔ سیاست میں سولو فلائٹ نہیں ہوتی، ہمیشہ عمران خان کو مشورہ دیا کہ وہ سولو فلائٹ نہ لیں۔ بلکہ تمام سیاسی جماعتوں کو ساتھ لیکر چلیں۔ سینٹ کے الیکشن میں انہوں نے اپنی بدترین مخالف جماعت مسلم لیگ ’’ن‘‘ سے ووٹ لئے بھی اور انہیں ووٹ دئیے بھی ہیں جو اچھا اور جمہوری طرز عمل ہے۔ نئے صوبوں کا قیام وقت کا تقاضا ہے۔ انہوں نے کہا کہ عمران اور قادری دراصل کسی اور کی گیم میں آ گئے تھے اور اس قوت کی کوشش تھی کہ فوج کو کسی طرح تقسیم کیا جائے۔ میرا خاندان وہ واحد خاندان ہے جس پر تعلیمی ادارے بنوانے کے جرم میں دہشت گردی کے پرچے کاٹے گئے ہیں۔ زرعی یونیورسٹی کے قیام کے نوٹیفکیشن جاری کرنے پر وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کا شکرگزار ہوں۔