سیاسی بحران کو پوائنٹ آف نو ریٹرن پر لے جانے سے گریز کیا جائے: فخر امام

کبیروالا(نامہ نگار)حکومت مستقبل میں درپیش چیلنجز کو مدنظر رکھ فیصلے کرے۔پاکستان کو انڈیا کی آبی دہشت گردی کا سدباب کرنے کیلئے جنگی بنیادوں پر مؤثر اقدامات اٹھاناہوں گے ،آنیوالے دنوں میں پانی کا بحران شدت اختیار کرسکتا ہے ،بدقسمتی سے پاکستانی حکمرانوں نے کبھی بھی’’نئے ڈیمز‘‘ کی تعمیر کو اپنی ترجیحات کا حصہ نہیں بنایا،ان خیالات کا اظہار سید فخرامام نے گزشتہ روز جامعہ رضویہ شمس العلوم کبیروالا کے مہتمم اور ممتاز عالم دین علامہ مفتی نصیر الدین رضوی ،مولانا غلام محی الدین ،معین الدین کی والدہ اور معروف تاجر محمد ظفر صدیقی کی اہلیہ کی وفات پر اظہار تعزیت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں قیام امن کے حوالے صورت حال ماضی کے مقابلے کافی بہتر ہوچکی ہے پاکستان کی سلامتی اور ترقی کے دشمنوں کو ہضم نہیں ہورہی ہے،بلوچستان اور خبیر پختونخواہ سمیت دیگر علاقوں میںہونے والے ’’دہشت گردانہ ‘‘ واقعات پیچھے جو طاقتیں کارفرما ہیں ۔حکومت حالات کے تناظر میں سوچ سمجھ کر دانشمندانہ فیصلے کرے ،حکومتی اور سیاسی شخصیات سیاسی بحران کو ’’پوائنٹ آف نوریٹرن‘‘ کی جانب لے جانے سے گریز کریں ۔اس موقع پر رانا ماجد مصطفیٰ،حفیظ سعیدی،محمد رفیق بھٹہ ،حکیم عبدالوہاب چوہدری اور دیگر بھی موجود تھے۔