مظفرگڑھ کا سیوریج نظام مستقل بحال کرنے کیلئے محکمہ پبلک ہیلتھ سے مشاورت کی جائیگی

مظفرگڑھ کا سیوریج نظام مستقل بحال کرنے کیلئے محکمہ پبلک ہیلتھ سے مشاورت کی جائیگی

مظفرگڑھ(نامہ نگار) ڈی سی او مظفرگڑھ فراست اقبال نے کہا ہے کہ مون سون کی بارشیوں کی وجہ شہر کے نشیبی علاقوں میں پانی کھڑا ہو جاتاہے جس کی بروقت نکاسی صحت و صفائی کےلئے ضروری ہے یہ بات انہوں نے مظفرگڑھ شہر کے مختلف علاقوں کا معائنہ کرتے ہوئے کہی اس موقع پر اے ڈی سی سکندر ذوالقرنین کھچی بھی ان کے ہمراہ تھے، ڈی سی او نے کہا کہ گزشتہ دنوں ہونے والی بارش کی وجہ سے شہر کے مختلف علاقوں میں جو پانی کھڑا ہوا تھا فوری طور پر نکال دیا گیا ہے تاکہ مچھروں کی افزائش نہ ہوسکے ،ڈی سی او نے کہا کہ مچھروں کے لاروا کو ختم کرنے کےلئے کھڑے پانی میں ادویات سپرے کرائی جائیں گی اس سلسلے میں 8اگست سے خصوصی مہم بھی شروع کی جائے گی، انہوں نے کہا کہ شہر کے سیوریج سسٹم کو مکمل بحال کرنے کےلئے نالوں میں جمع کیچڑ کو نکالا جارہا ہے عید سے قبل تمام شہر کے نالوں کو صاف کیا جائے گا، جس سے آئندہ بارشیوں کے دوران گلی محلوںمیں پانی کھڑا نہیں ہوگا، انہوںنے کہا کہ جن شاہرات پر بارش کا پانی کھڑا ہوتا ہے ان کو اونچا کرنے کےلئے محکمہ روڑ سے سروے کرایا جائے گا، شہر کے سیوریج سسٹم کو مستقل بنیادوں پر بحال کرنے کےلئے محکمہ پبلک ہیلتھ سے مشاورت کی جائے گی ، جسو والا ڈسپوزل پمپ کے پانی کے نکاس کے مستقل حل کےلئے بھی سکیم شروع کی جائے گی،اس موقع پر اے ڈی سی سکندر ذوالقرنین نے بتایا کہ شہر کے سیوریج کے مسئلے کی وجہ نالوں کا مکمل صاف نہ ہونا ہے ٹی ایم اے نے اتوار کا دن نالوں سے کیچڑ صاف کرنے کےلئے مختص کردیا ہے ۔ دریں اثناء ڈی سی او مظفرگڑھ فراست اقبال نے کہا ہے کہ مون سون کی بارشوں کی وجہ سے دونوں دریاﺅں میں پانی کا بہاو تیز ہے اس لئے فوجداری کی دفعہ 144کے تحت دریائے چناب اور دریائے سندھ اور ہیڈ پنجندکے کناروں بالخصوص چناب پارک اور تونسہ بیراج کے مقام پر دریاکے کناروں سے 200گز کی حدودمیں ہر خاص و عام کی داخلے پر پابندی لگائی جاتی ہے اور دریا میں نہانے اور کشتی رانی پر سختی سے پابندی ہے ،خلاف ورزی کرنے پر سخت قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔
فراست اقبال