جمہوریت کی بقا کیلئے انتخابی نتائج کو قبول کیا: شاہ محمودقریشی

جمہوریت کی بقا کیلئے انتخابی نتائج کو قبول کیا: شاہ محمودقریشی

ملتان (جنرل رپورٹر) پاکستان تحریک انصاف کے وائس چیئرمین مخدوم شاہ محمودقریشی نے کہا ہے کہ ملک بچانے کے لئے ہمیں تبدیلی کی ابتدا اپنی ذات سے کرنا ہوگی کیونکہ موروثی سیاست کے نتائج ہمارے سامنے ہیں اور آج تک جو کچھ طالع آزما اس ملک کے ساتھ کرتے رہے وہ ہماری تاریخ کا المیہ اور سیاہ باب ہے۔ وہ گزشتہ روز یوسی13 میں میاں اسفند تنویر کی رہائش گاہ اور یوسی22 میں رابطہ کمیٹیوں کی تشکیل کے سلسلے میں کارنر میٹنگوں سے خطاب کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے 66برسوں میں تجربات کے سوا کچھ نہیں کیا لیکن اب ہم اپنی سیاسی روایات کو دہرانے کے متحمل نہیں ہو سکتے کیونکہ بار بار کے تجربات نے ہمیں تباہی کے آخری کنارے پر لاکھڑا کیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ آج ضرورت اس امر کی ہے کہ ہم تبدیلی کی ابتدا اپنی ذات سے کریں۔ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف ایک نئی سیاسی جماعت ضرور ہے لیکن اس جماعت نے پاکستانی عوام کی سوچ کے دھارے تبدیل کرنے میں جو کردار ادا کیا ہے وہ ناقابل فراموش ہے۔ انہوں نے کہا کہ قطع نظر اس کے کہ ہمارے مینڈیٹ پر شب خون مارا گیا لیکن ہم نے اس ملک میں جمہوریت کی بقا کے لئے انتخابی نتائج کو قبول کیا۔ ہم ووٹ کی طاقت کے ذریعے اس ملک میں انقلاب لانا چاہتے ہیں۔ جمہوریت کا تسلسل چاہتے ہیں لیکن بعض قوتوں کو ہماری یہ امن پسند پالیسی پسند نہیں اسی لئے ہمیں دیوار سے لگانے کی سازشیں کی جا رہی ہیں۔ وہ جماعت جس کی قیادت گڑھی خدابخش میں سو رہی ہے اپنے سیاہ کرتوتوں کے باعث اپنا وجود کھو چکی ہے اور ن لیگ جسے بھاری مینڈیٹ لینے کا دعویٰ ہے صرف چار ماہ کی قلیل مدت میں اس کے غبارے سے بھی ہوا نکل چکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یونین کونسل کی سطح پر بنائی جانے والی رابطہ کمیٹیاں بلدیاتی انتخابات میں ایسا کردار ادا کر سکیں گی۔
شاہ محمودقریشی