پشاور ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے معاملے پر خیبر پی کے حکومت اور جماعت اسلامی میں اختلافات

پشاور (نوائے وقت رپورٹ) جماعت اسلامی سے تعلیم کی وزارت واپس لینے کے بعد اب وزیراعلیٰ خیبر پی کے کی جانب سے پشاور ڈویلپمنٹ اتھارٹی اور دیگر ترقیاتی اداروں کو الگ کرنے کا ایک اور تنازع کھڑا ہو گیا۔ وزیراعلیٰ پرویز خٹک نے حکم دیا کہ پشاور ڈویلپمنٹ اتھارٹی سمیت صوبے کے دیگر شہروں کے ترقیاتی اداروں کو محکمہ بلدیات سے الگ کرنے کی سمری بھجوائی جائے۔ صوبائی وزیر بلدیات عنایت اللہ نے سمری روک لی اور کہا کہ وزیراعلیٰ کو ایگزیکٹو آرڈر کے ذریعے یہ فیصلہ کرنے کا اختیار حاصل ہی نہیں۔ لوکل گورنمنٹ ایکٹ میں ترمیم کیلئے صوبائی اسمبلی ہی مجاز ہے۔ وہ ایسا کوئی فیصلہ نہیں ہونے دیں گے۔ معاملہ جب اسمبلی میں آئے گا تو بات ہو گی۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ سمری پاکستان تحریک انصاف کے دو مشیروں کو نوازنے کیلئے منگوائی گئی۔ جماعت اسلامی کا کہنا ہے کہ پہلے ان سے تعلیم کی وزارت واپس لے لی گئی اب پشاور ترقیاتی ادارے سمیت دیگر اتھارٹیز کو محکمہ ہا¶سنگ میں ضم اور محکمہ بلدیات سے الگ کیا گیا معاملات بگڑ جائیں گے۔