شکیل آفریدی کو دوسری جیل منتقل کیا جائے خیبر پی کے حکومت کی وفاق سے درخواست

پشاور(اے این این) خیبر پی کے حکومت نے ایک بار پھر وفاقی حکومت سے پشاور جیل میں قید ڈاکٹر شکیل آفریدی کو اپنی تحویل میں لیتے ہوئے کسی دوسری جیل منتقل کرنے کی درخواست کی ہے، ڈاکٹر آفریدی کو گزشتہ سال ایف سی آر کے تحت خیبر ایجنسی کی انتظامیہ نے شدت پسندوں سے تعلق کے الزام میں 33 سال قید بامشقت کی سزا سنائی تھی۔ صوبائی وزیراعلیٰ کے مشیر برائے جیل خانہ جات ملک قاسم نے اتوار کو” وائس آف امریکہ “سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹر آفریدی کی سکیورٹی اور پشاور جیل میں رکھنے پر کافی اخراجات آرہے ہیں اس لیے وفاق سے اسے منتقل کرنے کی درخواست کی گئی۔ انہوں نے کہاکہ ہم نے تو کہا ہے کہ یہ وفاق کا قیدی ہے وہ اسے لے لے اور اس پر ہمارا جو خرچہ آتا ہے وہ وفاق دے۔ گزشتہ سال صوبے کی سابقہ حکومت نے بھی وفاق سے اسی قسم کا مطالبہ کیا تھا لیکن حکومت نے اس کا کوئی خاطر خواہ جواب نہیں دیا۔ ڈاکٹر آفریدی کے وکلا میں شامل میں ایک وکیل سمیع اللہ آفریدی نے صوبائی حکومت کے موقف کی تائید کرتے ہوئے کہا کہ یہ ان کے موکل کی سلامتی کے لیے بھی ضروری ہے۔