شکارپور پولیس کا کچے میں آپریشن، امام بارگاہ خودکش حملے کے 2 اہم ملزم گرفتار

شکار پور (نوائے وقت رپورٹ) شکارپور پولیس کی بھاری نفری نے گزشتہ روز سانحہ شکارپور میں ملوث 2 دہشت گردوں خلیل اور رسول بخش کو کچے کے علاقے سے گرفتار کر لیا جن کا تعلق ڈیرہ مراد جمالی سے ہے۔ ایس ایس پی شکار پور ثاقب اسماعیل میمن نے صحافیوں کو بتایا کہ گرفتار دہشت گردوں نے گاﺅں خواستی میں خودکش حملہ آور الیاس بروہی جس کا تعلق کوئٹہ سے تھا کو مفرور دہشت گرد علی شییر گھر میں ایک ہفتے تک مہمان بنا کر ٹھہرایا تھا۔ پولیس نے ملزموں کے قبضے سے بارود سے بھرا ڈرم، 2 خودکش جیکٹس، بال بیرنگ، جدید اسلحہ اور پریشر ککر بم برآمد کرلیا۔ پولیس کے مطابق گرفتار ایک ملزم کا تعلق لشکر جھنگوی دوسرے کا جیش الاسلام سے ہے۔ ملزموں نے خودکش دھماکہ ہوجانے کے بعد دھرنے کے شرکاءپر پریشر ککر بم سے حملہ کرنا تھا مگر سخت حفاظتی انتظامات کے باعث ایسا نہ کرسکے۔ واضح رہے 30 جنوری کو شکار پور کی امام بارگاہ پر خودکش حملے میں 64 افراد شہید اور متعدد زخمی ہوئے تھے۔ اس سانحہ کے مقدمہ میں پہلے سے گرفتار ملزموں کی نشاندہی پر ان کے دونوں ساتھیوں کو پکڑا گیا۔ ان دونوں نے عباس متھری نامی مخالف گروہ کے رہنما کو قتل کیا تھا۔