مظفر گڑھ کے سب انسپکٹر نے رشوت نہ دینے پر ٹرک ڈرائیور کو تشدد کرکے معذور بنا دیا

پشاور (نوائے وقت رپورٹ) رشوت نہ دینے پر مظفرگڑھ پولیس کے سب انسپکٹر نے پشاور کے غریب ٹرک ڈرائیور کو ریڑھ کی ہڈی توڑ کر ہمیشہ کیلئے معذور بنا ڈالا۔ جواں سال شخص عمر بھر کیلئے بستر سے جا لگا اور اسکی بیوی اور 5 بچے زمانے کی ٹھوکروں کی زد میں آ گئے۔ ڈرائیور نور محمد کے مطابق وہ ملتان سے پشاور آ رہا تھا کہ مظفر گڑھ میں پولیس کے ایک سب انسپکٹر نے اسے روک کر ایک ہزار روپے رشوت طلب کی۔ میرے پاس صرف 200 روپے تھے پولیس نے مجھ پر وحشیانہ تشدد کیا جس سے میری ریڑھ کی ہڈی ٹوٹ گئی اور اسکا نچلا دھڑ مفلوج ہو گیا۔ پشاور کے علاقے متنی سے تعلق رکھنے والے 35 سالہ نور محمد کے مطابق اسکا قصور بس اتنا تھا کہ اسکی جیب میں پولیس کو رشوت دینے کیلئے ایک ہزار روپے نہیں تھے۔ ڈاکٹروں کے مطابق نور محمد کا علاج نہ صرف پاکستان بلکہ دنیا کے کسی بھی ملک میں ممکن نہیں۔ پانچ بچوں کے باپ نور محمد کے بھائی نے چیف جسٹس، وزیراعظم اور وزیراعلیٰ پنجاب سے متاثرہ خاندان کو انصاف دلانے اور بچوں کی کفالت کرنے کی اپیل کی ہے۔ دریں اثناء آئی جی پنجاب خان بیگ نے معاملے کا نوٹس لیتے ہوئے تحقیقات کا حکم دیای ہے ایس پی سطح کا افسر واقعہ کی تحقیقات کریگا اور قصور وار اہلکاورں کو سزا دی جائیگی۔