مانانوالہ: پسند کی شادی کی مخالفت پر نوجوان کی فائرنگ سے 2 بہنیں جاں بحق

مانانوالہ (نامہ نگار) پسند کی شادی سے منع کرنے پر نوجوان نے اندھا دھند فائرنگ کر کے اپنی دو حقیقی بہنوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا۔ واردات کے بعد ملزم ہوائی فائرنگ کرتے ہوئے فرار ہونے میں کامیاب ہو گیا۔ دہرے قتل کی لرزہ خیز واردات پر علاقہ بھر میں خوف و ہراس پھیل گیا۔ وارڈ نمبر 4 مانانوالہ کا 26 سالہ نوجوان کامران اشرف ننکانہ میں اپنی پسند کی شادی کروانا چاہتا تھا لیکن اس کی والدہ صغریٰ بی بی اور بہنوں صوبیہ و لیلیٰ نے اسے ایسا کرنے سے منع کیا جس کی وجہ سے اکثر گھر میں جھگڑا رہتا تھا۔ وقوعہ کے روز بھی اسی بات پر جھگڑا ہوا جس پر ملزم کامران اشرف نے مشتعل ہو کر پسٹل سے فائرنگ کر دی جس کی زد میں آ کر 18 سالہ لیلیٰ اور 22 سالہ صوبیہ شدید زخمی ہو گئیں اور زخموں کی تاب نہ لا کر موقع پر زندگی کی بازی ہار گئیں۔ دوہرے قتل کی واردات کی اطلاع پر ڈی ایس پی سرکل صفدر آباد رائو آصف زمان اور ایس ایچ او مانانوالہ محمد اعظم بسراء بھاری نفری کے ہمراہ موقع پر پہنچ گئے اور نعشیں قبضہ میں لے کر پوسٹمارٹم کیلئے ڈسٹرکٹ ہسپتال  شیخوپورہ روانہ کر دیں۔ پولیس نے مقتولین کی والدہ صغریٰ بی بی کی مدعیت میں ملزم کامران کے خلاف مقدمہ درج کر کے گرفتاری کیلئے چھاپے مارنے شروع کر دئیے ہیں۔ یاد رہے کہ مقتولہ صوبیہ کی چند دن بعد شادی تھی۔