گجرات جلسے کی جھلکیاں

(طفیل میر سے) ٭۔عمران خان کی آمد پر 8 داخلی راستوں پر 8 بکروں کا چودھری سلےم سرور جوڑا کی جانب سے صدقہ دیا گیا۔٭۔عمران خان نے کامیاب جلسے پر تحصےل کوآرڈنیٹر سلےم سرور جوڑا کو خراج تحسین پیش کیا۔ ٭۔پنڈال کے ارد گرد چار سے تین کلو میٹر تک ٹرانسپورٹ کا داخلہ ممنوع کر دیا گیا جس پر پیدل چل کر لوگ جلسہ گاہ پہنچے۔٭۔جلسہ میں زیادہ تعداد مردو خواتین کی تھی ٭۔ٹریفک انتظامات کو پہلی مرتبہ شاندار بنایا گیا۔٭۔حلقہ این اے 105کے امیدوار الحاج افضل گوندل لوگوں کو تو جلسہ گاہ نہ لا سکے تاہم سٹےج پر ڈانس کر کے لوگوں اور عمران خان کو محظوظ کرتے رہے۔٭۔حلقہ این اے 104کے امیدوار عثمان طارق کو 5لاکھ کے فنڈز جمع نہ کروانے پر سٹیج پر نہ بٹھایا گیا۔٭۔ تحریک انصاف کے قائد عمران خان کے استقبال کےلئے صبح سے ہی مردو خواتین جلسہ گاہ پہنچنا شروع ہو گئے تھے۔٭۔جلسہ میں جمعہ کے بعد لوگوں کی آمد و رفت کا سلسلہ تیز ہوا۔٭۔ چہروں کو پی ٹی آئی کے جھنڈوں سے کلر فل بنانے کےلئے خواتین مرد برُش پینٹ لیکر نقش و نگار بناتے رہے ٭۔ڈی پی او گجرات رائے اعجاز تمام تر سیکورٹی انتظامات کی خو د نگرانی کرتے رہے۔٭۔پی ٹی آئی کے اہلکاروں نے دروازوں پر خود سکیورٹی کا انتظام سنبھالے رکھا۔٭۔جلسہ گاہ میں کھانے پےنے اور پی ٹی آئی کے جھنڈوں، آئس کریم کے سٹال صبح سے رات گئے تک سجے رہے جنکی چاندی رہی۔٭۔چودھری سلےم سرور جوڑا سمیت 10ٹکٹ ہولڈر سٹیج پر براجمان ہونے کی اجازت دی گئی۔٭۔جلسہ گاہ میں موجود نوجوان ہلڑ بازی کرتے رہے ٭۔عمران خان اسلام آباد بنی گلہ سے بذریعہ ہیلی کاپٹر کی بجائے بذریعہ روڈ گجرات پہنچنے۔٭۔عمران خان جلسہ گاہ میں 5:56 منٹ پر بذریعہ روڈ ظہور الٰہی سٹیڈیم پہنچے۔٭۔ 5ایل سی ڈیز لگا کر دور دراز بیٹھے لوگ عمران خان کی تقریر سنتے رہے۔٭۔ضلعی قیادت کی آپس میں سکیورٹی معاملات پر جھڑپیں ہوتی رہیں۔٭۔ڈی سی او گجرات لیاقت علی چٹھہ ہدایات دیتے رہے اور انتظامات چیک کرتے رہے۔٭۔عمران خان کی آمد پر فضا میں غبارے چھوڑ گئے ٭۔عمران خان نے45منٹ مسلسل تقریر کی اور نوجوانوں کو گرمائے رکھا۔