بچے، بچیاں دہشت گردوں سے دور رہیں، طاہر القادری نے امن نصاب پیش کردیا

بچے، بچیاں دہشت گردوں سے دور رہیں، طاہر القادری نے امن نصاب پیش کردیا

لندن (رائٹرز + آن لائن) پاکستان عوامی تحریک کے قائد ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا ہے داعش اور اس نوع کی دیگر تنظیمیں دہشتگرد اور خارجی ہیں ان کی تعلیمات کا اسلام اور قرآن سے کوئی تعلق نہیں۔ بے گناہ انسانوں کا خون بہانا اسلام اور قرآن کی بنیادی آئیڈیالوجی کے خلاف ہے۔ جہاد کے نام پر فساد کرنے والوں اور نوجوانوں کی برین واشنگ کرنے والوں کے خلاف پوری قوت سے ٹکرانے کا وقت آ گیا۔ ایسے دہشتگرد اور بے دین عناصر اسلام اور امت مسلمہ کو کمزور کررہے ہیں۔ اسلام امن اور محبت کا دین ہے۔ لندن میں دہشتگردی اور انتہا پسندی کے خاتمہ کے حوالے سے تیار کئے گئے امن نصاب کی تقریب رونمائی سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا دہشتگرد تنظیمیں نوجوانوں کو گمراہ کررہی ہیں میں اپنے اسلامی بچوں، بچیوں، طالبعلموں سے کہوں گا اس فتنے سے دور رہیں، جہاد کے نام پر بے گناہوں کا خون بہانے والے دہشتگرد ہیں۔ یہ دہشتگرد اسلام کو بدنام اور امت کو کمزور اور تقسیم کررہے ہیں۔ اسلام امن، برداشت، بھائی چارہ کا دین ہے۔ آج عراق، شام، افغانستان میں بہت سارے دہشتگرد گروپ معصوم بچوں، بچیوں، خواتین کو ورغلا رہے ہیں، ان کا نہ کوئی دین ہے نہ کوئی وطن اور نہ کوئی قانونی شناخت، یہ ایک خاص مائنڈ سیٹ ہے۔ یہ نام بدل بدل کر حملہ آور ہورہے ہیں لیکن ان کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ رائٹرز سے گفتگو کرتے ہوئے طاہر القادری نے کہا داعش یا کسی دوسری دہشت گرد اور انتہا پسند تنظیم کی جانب سے اللہ اور مذہب کے نام پر دہشت گردی قرآن اور اسلام کے خلاف ہے۔ سابق برطانوی وزیر سعیدہ وارثی نے پولیس، سیاستدانوں، اماموں کے ایک اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے بتایا حکومت اس نصاب کو تمام سکولوں میں استعمال کر سکتی ہے۔