ننکانہ سمیت کئی شہروں میں نہاتے ہوئے 14افراد ڈوب گئے، 4کو بچا لیا گیا

ننکانہ سمیت کئی شہروں میں نہاتے ہوئے 14افراد ڈوب گئے، 4کو بچا لیا گیا

لاہور (نامہ نگاران) مختلف شہروں میں دریاﺅں اور نہروں پر نہاتے ہوئے 14افراد ڈوب کر ہلاک ہو گئے جن میں سے 3کی نعشیں مل گئیں جبکہ 6کی نعشوں کی تلاش جاری ہے۔ سیالکوٹ سے نامہ نگار کے مطابق مختلف مقامات پر نہروں میں نہاتے ہوئے تین نوجوان ڈوب گئے جبکہ چار کو زندہ بچا لیا گیا۔ ریسکیو 1122کے مطابق ہیڈمرالہ کے مقام پر پانچ لڑکے نہر میں نہاتے ہوئے ڈوب گئے جن میں سے چار کو زندہ بچا لیا گیا لیکن ایک کو نہ بچایا جا سکے اور نہ ہی اس کی نعش مل سکی۔ اسی طرح ڈھلے والی نہر اور میانوالی بنگلہ نہروں میں بھی دو نوجوان ڈوب گئے۔ ریسکیو کے غوطہ خوروں نے ڈوبنے والوں کی تلاش کی لیکن نوجوان کی نعشیں نہ مل سکیں۔ گجرات سے نامہ نگار کے مطابق شاہین چوک کا 10سالہ لڑکا ساروکی شہر میں ڈوب کر جاں بحق ہو گیا۔ 10سالہ عادل شدید گرمی میں ساروکی نہر میں نہانے کیلئے گیا، نہاتے ہوئے وہ گہرے پانی میں چلا گیا، جس سے وہ لہروں کی نذر ہو گیا، نعش کی تلاش جاری ہے۔ ڈسکہ سے نامہ نگار کے مطابق لوڈشیڈنگ اور گرمی کی شدت سے تنگ آیا نوجوان نہر بی آر بی میں نہاتے ہوئے ڈوب گیا۔ موضع رتہ باجوہ کا 30سالہ نوجوان محمد عثمان دوستوں کے ہمراہ نہانے کے لئے میانوالی بنگلہ بی آر بی نہر پر آیا اور ڈوب گیا۔ سرائے مغل سے نامہ نگار کے مطابق دریائے راوی ہیڈ بلوکی کے مقام پر دو نوجوان نہاتے ہوئے ڈوب گئے۔ خانیوال کا 19سالہ امتیاز اور چونگی امرسدھو کا 15سالہ محمد بشیر نہا رہے تھے کہ گہرے پانی میں چلے گئے۔ لاہور مرینہ بوٹ کلب اور 1122نے محمد بشیر کو نکال لیا مگر وہ جانبر نہ ہو سکا جبکہ امتیاز احمد کی نعش نہ مل سکی۔ سردار گڑھ اور بھکر سے نامہ نگاروں کے مطابق ایک نوجوان نہر دوسرا دریائے سندھ میں ڈوب کر جاں بحق ہو گیا۔ میانوالی قریشیاں کا 28سالہ نوجوان ملک محمد ایاز نہر صادق برانچ میں ڈوب گیا۔ بعدازاں نعشیں مل گئی۔ کلورکوٹ شہر کے محلہ جعفریاں والا کا پندرہ سالہ آٹھویں جماعت کا طالب علم زین رضا دریائے سندھ میں نہانے کے لئے گیا اور ڈوب کر جاں بحق ہو گیا۔ متوفی کی نعش کو ایک گھنٹہ کی کوشش سے دریائے سندھ سے تلاش کرلیا گیا۔ ٹھٹھہ میں کنچھر جھیل کی تفریح کو آنے والے کورنگی کے دو نوجوان اور ایک تین سالہ بچہ بھی نہاتے ہوئے جھیل میں ڈوب کر ہلاک ہو گئے ہیں۔ ہلاک ہونے والے دونوں نوجوانوں اور تین سالہ بچے کا تعلق ایک ہی خاندان سے ہے اور تینوں کا تعلق کورنگی کراچی سے بتایا جاتا ہے۔ ننکانہ صاحب سے نامہ نگار کے مطابق نہر میں نہاتے ہوئے ایک نوجوان ڈوب کر جاں بحق ہو گیا۔ شادباغ کالونی ننکانہ صاحب کا 17سالہ عثمان اپنے دوستوں کے ساتھ چندر کوٹ نہر میں نہاتے ہوئے ڈوب گیا۔ ریسکیو 1122ننکانہ صاحب کا عملہ موقع پر پہنچ گیا جنہوں نے عثمان کی نعش کو نہر سے باہر نکال کر ورثاءکے حوالے کر دیا۔میانوالی سے نامہ نگار کے مطابق چک قدرت آباد کے قریب نہر مہاجر برانچ میں ایک مسافر ڈاٹسن گر گئی جس کے نتیجے میں دو عورتیں اور ایک بچہ ڈوب گئے جبکہ ڈاٹسن کے ڈرائیور اور 6مسافروں کو زخمی حالت میں نکال لیا گیا۔ 1122ریسکیو اور دیگر افراد ڈوبنے والی عورتوں، بچے کی تلاش کر رہے ہیں۔لاہور (نامہ نگار) غوطہ خور نے معمر خاتون کی دریائے راوی میں کود کر خود کشی کی کوشش ناکام بنا دی۔ گذشتہ روز دریائے راوی میں 65 سالہ معمر خاتون عنایت بی بی نے چھلانگ لگا کر خود کشی کی کوشش کی جسے وہاں تعینات ضلعی انتظامیہ کے غوطہ خور محمد اسلم نے دریا میں کود کر باہر نکال لیا۔ خاتون کو طبی امداد کے لئے ہسپتال داخل کرا دیا گیا جہاں اس کی حالت خطرے سے باہر بتائی جاتی ہے۔ یاد رہے کہ دریائے راوی میں ڈوبنے سے بڑھتی ہوئی ہلاکتوں کے سبب ضلعی انتظامیہ نے وہاں چند روز قبل غوطہ خور تعینات کر دیے ہیں۔