خیبر، اورکزئی ایجنسی میں فورسز کی بمباری، 29 شدت پسند جاں بحق

باڑہ/ ہنگو (نیوز ایجنسیاں) خیبر اور اورکزئی ایجنسی میں فورسز کی بمباری سے 29 شدت پسند جاں بحق، متعدد زخمی اور انکے کئی ٹھکانے تباہ ہو گئے۔ تفصیلات کے مطابق خیبر ایجنسی کے علاقے وادی تیراہ میں سکیورٹی فورسز کے جیٹ طیاروں نے شدت پسندوں کے ٹھکانوں پر بمباری سے 9 شدت پسند جاں بحق جبکہ ان کے 3 ٹھکانے تباہ ہو گئے۔ اسسٹنٹ پولیٹیکل ایجنٹ اپر اورکزئی ایجنسی رفیق مہمند کے مطابق ماموزئی میں جیٹ طیاروں نے شدت پسندوں کے مشتبہ ٹھکانوں پر بمباری کی جس میں 20 شدت پسند جاں بحق اور متعدد زخمی ہو گئے۔ بمباری کے نتیجے میں شدت پسندوں کے 4 ٹھکانے بھی تباہ ہو گئے۔ ادھر سکیورٹی فورسز نے لوئردیر کی تحصیل میدان میں اطلاع ملنے پر کارروائی کی اور آپریشن کے دوران ایک راکٹ لانچر، 22 راکٹ گولے، 7 فیوز،3 ٹینک شکن بارودی سرنگیں برآمد کر لیں۔ سکیورٹی فورسز نے 6 مارٹر گولے، ایک ایس ایم جی، 2 رائفل، 2 مشین گن، سینکڑوں کارتوس اور10 کلو بارودی مواد اورکیمیکل بھی اپنے قبضے میں لے لیا۔ ٹانک کے مصروف ترین اڈہ بازار میں نامعلوم افراد کی اندھادھند فائرنگ سے امن کمیٹی کے سابق رکن گل مشا عرف بائیوالی سکنہ پٹھانکوٹ موقع پر جاں بحق جبکہ دو راہگیر طارق شدید زخمی ہوگئے۔ خیبر ہاﺅس پشاور میں خودکش حملے میں جاںبحق ہونے والے اسسٹنٹ پولیٹیکل ایجنٹ لنڈی کوتل خالد ممتاز کنڈی کی نماز جنازہ ٹانک میں ان کے آبائی گاﺅں درکی میں ادا کرنے کے بعد ان تدفین خاندانی قبرستان میں کردی گئی۔ نماز جنازہ میں ڈپٹی کمشنر پشاور اور پولیٹیکل ایجنٹ جنوبی وزیرستان اور دیگر سیاسی و سماجی شخصیات سمیت ہزاروں کی تعداد میں لوگوں نے شرکت کی۔