سرکاری ہسپتال میں ڈاکٹروں کی غفلت سے جاں بحق کمسن بچی کے ورثاء کا میت سڑک پر رکھ کر مظاہرہ

ڈیرہ غازی خان (آن لائن) ٹیچنگ ہسپتال کے ایمرجنسی وارڈ میں زیرِ علاج 6 سالہ بچی ڈاکٹروں کی مبینہ غفلت سے تڑپ تڑپ دم توڑ گئی، ورثاء نے نعش سڑک پررکھ کر ڈاکٹروں کے خلاف مظاہر ہ کیا۔ تفصیلات کے مطابق پیر عادل کے رہائشی علی محمد منجوٹھہ نے بتایا کہ وہ گزشتہ روز صبح اپنی 6سالہ بیٹی قافیہ مائی جوکہ تیسری کلاس کی طالبہ ہے‘ کو علاج کی غرض سے ایمرجنسی وارڈ لایا بچی کو بخار بہت تیز تھا جہاں پر ایمرجنسی وارڈ کے ڈیوٹی ڈاکٹرز ڈاکٹر وسیم، ڈاکٹر طارق اور ڈاکٹر الطاف نے ٹال مٹول کا مظاہرہ کرتے ہوئے بچی کو چیک نہ کیا۔ ڈاکٹروں کی غفلت کی وجہ سے دوپہر 3بجے کے قریب میری بیٹی قافیہ مائی نے تڑپ تڑپ کر جان دے دی۔ شہریوں نے وزیراعلیٰ شہباز شریف، سیکرٹری صحت اور کمشنر ڈویژن ڈیرہ غازیخان سے مطالبہ ہے کہ ڈاکٹروںکی غفلت سے جاں بحق ہونے والی بچی کی واقعہ کی تحقیقات کرائیں۔