جلالپور بھٹیاں: لڑکی سے اجتماعی زیادتی‘ بااثر ملزموں نے ماں باپ کو گاڑی سے کچل کر مار ڈالا

جلالپور بھٹیاں: لڑکی سے اجتماعی زیادتی‘ بااثر ملزموں نے ماں باپ کو گاڑی سے کچل کر مار ڈالا

حافظ آباد + جلالپور بھٹیاں (نمائندہ نوا ئے وقت + نامہ نگار) جلالپور بھٹیاں کے نواحی گائوں پھلو چراغ شاہ میں بااثر چودھریوں نے محنت کش کی 16 سالہ بیٹی سے مبینہ زیادتی کی اور بیوی اور بیٹی کے ہمراہ ڈی پی او آفس شکایت کے لئے آنے والے محنت کش کو بااثر چودھریوں نے کار سے کچل ڈالا جس کے نتیجہ میں محنت کش اور اُسکی بیوی جاں بحق جبکہ بیٹی شدید زخمی ہوگئی جسے تشویشناک حالت کے پیش نظر ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔ مقتولین کے لواحقین نے نعش کو راجہ چوک میں رکھ کر شدید احتجاج کیا جبکہ وزیراعلیٰ پنجاب نے لڑکی سے زیادتی اور اس کے والدین کو قتل کرنے کے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے ڈی پی او حافظ آباد سے رپورٹ طلب کرلی ہے۔ پھلو چراغ شاہ کے رہائشی محنت کش منور کی سولہ سالہ بیٹی شانزہ کو گائوں کے با اثر چودھریوں علی حسن چٹھہ اور شعیب سیال نے اپنے دو ساتھیوں کے ہمراہ مبینہ طور پر اغوا کیا اور اسے اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا۔ محنت کش منور اپنی بیوی شاہد ہ پروین اور بیٹی کے ہمراہ موٹر سائیکل پر ڈی پی او آفس درخواست جمع کروانے آ رہا تھاکہ قلعہ صاحب سنگھ بائی پاس کے قریب با اثر چودھریوں علی حسن چٹھہ اور شعیب سیال وغیرہ نے انہیں اپنی گاڑیسے کچل ڈالا جس کے باعث منور موقع پر ہی جاں بحق ہو گیا جبکہ اسکی بیٹی شانزہ کو ڈسٹرکٹ ہسپتال حافظ آباد اور بیوی شاہدہ پروین کو تشویشناک حالت کے پیش نظر لاہور ریفر کیا گیا جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گئی۔ مقتول منور کی نعش کو لواحقین سٹریچر سمیت ہی ہسپتال سے راجہ چوک لے آئے جہاں انہوں نے روڑ بلاک کر کے ملزمان اور پولیس کے خلاف شدید نعرہ بازی کی اور دو گھنٹے تک روڑ بلاک کئے رکھا تاہم پولیس کی جانب سے ملزمان کی گرفتاری کی یقین دہانی پر مظاہرین نے احتجاج ختم کر دیا۔ ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر محمد زبیر دریشک نے بھی ڈسٹرکٹ ہسپتال کا دورہ کیا اور لڑکی کی خیریت دریافت کی۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ مقتولین کی بیٹی شانزہ کی حالت تشویشناک ہے۔پولیس تھانہ جلالپور بھٹیاںنے 4 ملزمان کیخلاف اجتماعی زیادتی اور پولیس تھانہ صدر نے قتل کے الگ الگ مقدمات درج کر لئے جبکہ وزیراعلیٰ شہباز شریف نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے ہدایت کی ہے کہ بچی سے زیادتی اور مظلوم خاندان کو کار تلے کچلنے والے ملزموں کو فی الفور گرفتار کرکے ان کے خلاف قانون کے مطابق سخت کارروائی عمل میں لائی جائے۔
شاہ کوٹ+ نارنگ منڈی+ فیصل آباد (نامہ نگاران+ نمائندہ خصوصی) شاہ کوٹ، نارنگ منڈی، فیصل آباد اور تاندلیانوالہ میں 6 لڑکیوں، 7 سالہ بچے کو زیادتی کا نشانہ بنا دیا گیا۔ شاہ کوٹ کے نواحی گائوں کری والا میں اوباش نوجوان عابد علی نے اپنے ایک ساتھی منور کی مدد سے گائوں کی 17 سالہ لڑکی حمیرا بی بی کو اپنی ہوس کا نشانہ بنا دیا۔ زیادتی کا شکار لڑکی کا والد کھیتوں میں کام کر رہا تھا اس کی والدہ کھانا لے کر گئی ہوئی تھی اور وہ گھر میں اکیلی تھی، موقع پا کر ملزم عابد علی نے لڑکی حمیرا کو زیادتی کا نشانہ بنایا۔ اس دوران ملزم منور پہرہ دیتا رہا۔نارنگ منڈی میں محلہ مسلم پارک میں 30سالہ اوباش شخص اسرار مہر نے اپنے ہی خاندان کے 7سالہ بچے سے زیادتی کر ڈالی جسے تشویش ناک حالت میں ہسپتال داخل کروا دیا گیا ہے جبکہ پولیس کو بھی واقعہ کی اطلاع کر دی گئی ہے۔ اوباش شخص فرار ہو گیا ہے۔ علاوہ ازیں فیصل آباد میں دو بہنوں سمیت چار لڑکیوں کو اغوا کے بعد جبکہ ایک کو گھر گھس کر مبینہ طور پر زیادتی کا نشانہ بنا دیا گیا۔ تھانہ مدینہ ٹاؤن کے علاقہ عمر ٹاؤن کے رہائشی بشیر احمد کی بیٹی(ک) کو ملزمان عباس وغیرہ چار افراد نے، بٹالہ کالونی کے علاقہ ربانی کالونی کے حفیظ کی 14سالہ ہمشیرہ (ف) کو ملزمان حیدر علی وغیرہ چھ افراد نے، صدر کے علاقہ چک نمبر 215 ر۔ب کے محمد ریاض کی جواں سالہ بیٹیوں (ر) اور(د) کو ملزمان مہندی وغیرہ پانچ افراد نے اغوا کے بعد مبینہ طور پر زیادتی کا نشانہ بنا دیا۔ علاوہ ازیں تھانہ گڑھ کے علاقہ داخلی گڑھ کے ذوالفقار علی کی جواں سالہ بیٹی (الف) کو ملزمان غفار وغیرہ دو افراد نے گھر میں گھس کر زبردستی مبینہ طور پر زیادتی کا نشانہ بنا دیا۔ تاندلیانوالہ میں موضع داخلی گڑھ میں ایک شخص ذوالفقار کے گھر میں 3اوباش افراد  غفار وغیرہ نے داخل ہوکر گھر میں موجود اکیلی ذوالفقار کی بیٹی نورین کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا اور ملزمان فرار ہو گئے۔ پولیس نے مقدمہ درج کر لیا۔