وانا: انتخابی میٹنگ پر راکٹ حملہ‘ ایک جاں بحق‘ نوشہرہ میں مسلم لیگ ن کے جلسہ پر فائرنگ

جنوبی وزیرستان +نوشہرہ+ لاہور (این این آئی + خصوصی رپورٹر + نوائے وقت رپورٹ + بی بی سی) وانا میں این اے 41 سے آزاد امیدوار نصیراللہ وزیر کے جلسے پر شدت پسندوں نے 4 راکٹ فائر کئے جس کے نتیجے میں ایک شخص جاںبحق اور14 زخمی ہو گئے جبکہ سکیورٹی فورسز نے شدت پسندوں کے خلاف سرچ آپریشن کیا۔ جلسہ پر وچہ خورہ کے پہاڑ سے چار راکٹ فائر کئے گئے۔ ایک راکٹ رستم بازار، ایک اشرف خیل گاﺅں کے قریب نالے میں اور ایک وانا ایئرپورٹ کے قریب گرا تاہم کسی جانی نقصان کی اطلاع نہیں ملی۔ مسلم لیگ (ن) نے دھماکے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔ مسلم لیگ (ن) کے ترجمان سینیٹر طارق عظیم نے قرار دیا کہ انتخابی جلسوں پر حملے انتخابات ملتوی کرانے کی سازش ہیں۔ وزیر اعلیٰ پنجاب نجم سیٹھی نے وانا میں انتخابی جلسے پر حملے کی شدید مذمت کی ہے۔ علاوہ ازیں بونیر میں خاتون اپنے دو بچوں کے ہمراہ گھر کے قریب واقع کھیت میں چارہ کاٹ رہی تھی کہ اچانک دھماکہ ہو گیا۔ پولیس کے مطابق دھماکے میں ماں سمیت دونوں بچے جاںبحق ہوئے۔ ادھر پشاور کے نواحی علاقہ ادیزئی میں ریموٹ کنٹرول دھماکے سے تین افراد زخمی ہو گئے۔ دھماکہ خیز مواد مقامی امن کمیٹی کے رہنما واقف خان کے گھر کے قریب نصب کیا گیا تھا۔علاوہ ازیں نوشہرہ میں مسلم لیگ (ن) کے صوبائی اسمبلی کے امیدوار اختیار ولی خان کے جلسے پر نامعلوم موٹرسائیکل سواروں کی فائرنگ سے دو افراد شدید زخمی ہوگئے۔ مسلم لیگ ن کے کارکنوں نے جی ٹی روڈ بلاک کرکے شدید احتجاج کیا۔ فائرنگ کے نتیجہ میں وقاص الدین اور ماتل خان شدید زخمی ہوگئے۔ علاوہ ازیں نصیرآباد کے این اے 266 سے آزاد امیدوار غلام حیدر جاکھرانی پر نامعلوم افراد نے فائرنگ کی، ذرائع کے مطابق غلام حیدر جاکھرانی اس حملے میں محفوظ رہے۔