بجلی تکنیکی خرابی سے بند ہوتی ہے، صوبے بجلی پیدا کریں، تعاون کرینگے: خواجہ آصف

سیالکوٹ (آن لائن) پانی و بجلی کے وزیر خواجہ محمد آصف نے کہا ہے کہ450میگاواٹ بجلی پیدا کرنے کا نندی پور کا منصوبہ اگلے برس مکمل ہو جائے گا اور اس پر 57 ارب روپے لاگت آئے گی۔ سرکاری میڈیا سے باتیں کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حکومت کا کئی دوسرے منصوبوں پر بھی کام شروع کرنے کا پروگرام ہے تاکہ توانائی کے بحران اور لوڈشیڈنگ پر قابو پایا جاسکے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ ملک بھر میں بجلی کی ترسیل اور تقسیم کے نظام کو جدید خطوط پر استوار کیا جائے گا۔ انہوں نے بجلی اور گیس کی چوری میں ملوث افراد کو خبردار کیا کہ حکومت ان کے ساتھ آہنی ہاتھوں سے نمٹے گی۔ این این آئی کے مطابق نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے واضح کیا بجلی کی لوڈشیڈنگ مسلسل نہیں ہوتی بلکہ تکنیکی خرابی کی وجہ سے بند ہو جا تی ہے، دو ماہ میں محمدی گرڈ سٹیشن دوبارہ بحال کر دیں گے،صوبے بجلی پیدا کریں وفاق مکمل تعاون کرے گا، خیبر پی کے کو 2400میگا واٹ بجلی چاہئے، 1700میگا واٹ فراہم کر رہے ہیں، خیبر پی کے کا سسٹم اپ گریڈ کر نے کے لیے 11ارب درکار ہیں جبکہ خیبر پی کے میں ریکوری 80سے85فیصد ہے،بجلی کا مسئلہ 15سالہ پرانا ہے ٹھیک کر نے میں مہینو ں نہیں برسوں درکار ہوں گے، موجودہ حکومت کے اقدامات سے بجلی کی لوڈشیڈنگ پر کافی حد تک قابو پالیا گیا ہے مزید اقدامات بھی کیے جارہے ہیں ،موجودہ حکومت عوام کو اس لعنت سے چھٹکا را دلا کے رہے گی،چترال، دریائے سوات،کنہار پر ڈیم بنائے جا سکتے ہیں۔