اتحادیوں کے درمیان اختلاف نہیں لیکن ہر کوئی اپنا حق مانگتا ہے: ثناءاللہ زہری

کوئٹہ (آئی اےن پی) مسلم لیگ (ن) کے صوبائی صدر اور سینئر وزیر نواب ثناءاللہ زہری نے صوبے میں جاری بدامنی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس حوالے سے وزیراعلیٰ ڈاکٹر عبدالمالک سے بات کریں گے۔ مسلم لیگ (ن) مری معاہدے پر من وعن عمل کررہی ہے۔ دوسری جانب سے بھی معاہدے پر عمل درآمد کی توقع ہے۔ وزیراعلیٰ کی ذمہ داری ہے کہ وہ کابینہ کو فوری طور پر مکمل کرےں تاکہ لوگوں کی مشکلات کم ہو سکےں۔ اتحادیوں کے درمیان کوئی اختلاف نہیں البتہ ہر ایک اپنا حق مانگتا ہے۔ وہ پیر کو یہاں نوشکی سے نومنتخب رکن صوبائی اسمبلی غلام دستگیر بادینی کی مسلم لیگ (ن ) میں شمولیت کے موقع پر پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔ اس موقع پر وفاقی وزیر عبدالقادر بلوچ، اراکین صوبائی اسمبلی جعفرخان مندوخیل، سنتوش کمار، راحیلہ حمید درانی، آغا رضا ، سردار در محمد ناصر، عاصم کرد گیلو، صالح محمد بھوتانی اور طاہر محمود بھی موجود تھے۔ اس موقع پر نواب ثناءاللہ زہری نے غلام دستگیر بادینی کی مسلم لیگ (ن) میں شمولیت کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت بلوچستان میں مسلم لیگ (ن) سب سے بڑی پارٹی کے طور پر ابھر کر سامنے آئی ہے، پنجاب کے بعد مسلم لیگ (ن) کا دوسرا بڑا گڑھ بلوچستان ہے۔ اس کامیابی میں شہداءکا لہو شامل ہے جنہوں نے جمہوریت اور اس ملک کیلئے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا ۔ الےکشن سے قبل میرے خاندان کو بڑا صدمہ برداشت کرنا پڑا۔ مری میں ہونیوالے معاہدے پر مسلم لیگ (ن) کی جانب سے من وعن عمل جاری ہے البتہ ہم یہ کہتے ہیں کہ دوسری جانب سے بھی اس معاہدے پر من وعن عمل ہونا چاہئے۔ انہوں نے کہاکہ کابینہ کی تشکیل نہ ہونے کے باعث عوام کو شدید مشکلات کا سامنا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کابینہ میں تاخیر کی وجہ اتحادی پارٹیوں میں اختلافات نہیں بلکہ ہر ایک اپنا حق مانگتا ہے ہم نے پہلے دن جو و عدہ کیا تھا کہ اس حکومت کو بھر پور انداز میں سپورٹ کریں گے۔ جب کابینہ مکمل ہوگی تب ہم معاملات کو اپنے ہاتھ میں لے لیںگے، ہمارا شروع ہی دن سے ایک ہی ایجنڈا تھا کہ عوام کو روڈ ترقی، سکول اور نوکری نہیں بلکہ امن چاہئے جب امن ہوگی تو ترقی ممکن بنائی جاسکتی ہے۔