سانگلہ ہل: جبری مشقت سے انکار پر بھٹہ مالکان نے مزدور کو زنجیروں میں جکڑ دیا

سانگلا ہل (نمائندہ نوالے وقت) صفدر آباد روڈ پر چک نمبر 40  ہمراجپورہ کے قریبی عمران مغل بھٹہ خشت کے مالکان موسیٰ خان‘ امان اللہ خان‘ فاضل خان اور جمعدار یونس مسیح نے جبری مشقت سے انکار پر دلاور مسی کو قید کر لیا جس کی برآمدی کیلئے آصف مسیح نے  سیشن جج ننکانہ میاں محمد انور نذیر کی عدالت میں رٹ دائر کر دی۔ عدالتی بیلف نے پولیس کی بھاری نفری کے ہمراہ بھٹہ مالکان کی قید سے زنجیروں میں جکڑے دلاور مسیح کو برآمد کر لیا۔مغوی دلاور مسیح کو 17 فروری کو عدالت میں پیش کیا جائیگا۔پولیس نے زنجیر اور تالے قبضے میں لے لئے۔ چک نمبر 201/R.B چندیاں تلاواں ‘آصف مسیح ، قیصر مسیح،دلاور مسیح، فیاض مسیح ، روما بی بی، یاسمین بی بی بھتہ خشت پر7 ماہ سے پتھیروں کی مشقت کر رہے ہیں اور ننھے معصوم بچوں آشر مسیح عمر 6 سال ، زرقا بی بی عمر 3 سال، راحل بی بی عمر 10 سال، سنیھا بی بی عمر 7 سال، عاطف مسیح عمر 5 سال،اسد مسیح عمر 3 سال، کاشف مسیح عمر 6 ماہ کے ہمراہ بھتہ خشت کے کوارٹروں میں ہی رہائش پذیر ہیں، 2 ہفتے قبل بھٹہ خشت کے مالکان موسیٰ خاں ،امان اللہ خاں،فاضل خاں اور جمعدار یونس مسیح نے روز مرہ اجرت دینے سے انکار کر دیا اور جبری مشقت لینا شروع کر دی اور  دھمکی دی کہ ہمارا تعلق کالعدم تنظیموں افغانیوں سے ہے۔ اگر کوئی شکایت کی تو تمہاری فیملیوں کو افغانستان یا علاقہ غیر میں پہنچا دیں گے۔