پاکستان کی کشمیر پالیسی کشمیریوں کی امنگوں کے مطابق نہیں : علی گیلانی

پاکستان کی کشمیر پالیسی کشمیریوں کی امنگوں کے مطابق نہیں : علی گیلانی

 سرینگر(آن لائن+ کے پی آئی)کل جماعتی حریت کانفرنس(گ) کے سربراہ علی گیلانی نے پاکستان کی کشمیر پالیسی پر عدم اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کی موجودہ حکومت کی پالیسی کشمیری عوام کی قربانیوں اور خواہشات کے متضاد اور کشمیریوں کے زخموں پر نمک پاشی کے مترادف ہے ۔میڈیا رپورٹ کے مطابق ان خیالات کا اظہار انہوں نے بھارت میںپاکستانی ہائی کمشنر سلمان بشیر سے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ علی گیلانی نے پاکستان کا دورہ کرنے والے حریت لیڈروں کے ساتھ اختلافات کا کھل کر اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ کشمیریوں کو اعتماد میں لئے بغیر کوئی بھی دوطرفہ مذاکرات اور فوٹو سیشن پر مبنی چند حریت لیڈروں کے دوروں کا کوئی مقصد نہیں۔ علی گیلانی نے پاکستانی ہائی کمشنر کو شکوہ کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کشمیر کی حریت پسندوں کو دی جانے والی عمر قید اور موت کی سزاﺅں اور دیگر زیادتیوں پر خاموشی اختیار کرکے ہمارے زخموں پر نمک پاشی کررہا ہے۔بد قسمتی سے پاکستان کی موجودہ حکومت کی جانب سے اپنائی جانے والی کشمیر پالیسی کشمیری عوام کی قربانیوں اور ان کی خواہشات کی عکاسی نہیں کرتی۔علی گیلانی نے پاکستانی قیادت کو خبردار کیا کہ وہ کشمیر کے حوالے سے اپنی قومی پالیسی سے انحراف کرنے کی غلطی نہ کرے اور پاکستانی حکمرانوں کو یہ معلوم ہونا چاہیے کہ اگر پالیسی تبدیل کی گئی تو اس کا خمیازہ بھگتنا پڑے گا بلکہ اس کے دورس اثرات سے خود پاکستان بھی محفوظ نہیں رہ سکے گا اور بھارت کا کشمیر پر قبضہ برقرار رہا تو پاکستان کو کشمیری دریاﺅں کا ملنے والا پانی بھی روک دیا جائیگا۔اس موقع پر سلمان بشیر نے کہا کہ پاکستانی عوام اور حکومت آپ کا احترام کرتی ہے اور آپ کے دورہ پاکستان کی شدید خواہش رکھتے ہیں ،حکومت مسئلہ کشمیر کے حوالے سے آپ کے ساتھ مشاورت کی خواہاں ہے ۔کشمیری ہماری شہ رگ ہیں اسے کسی صورت نظر انداز نہیں کیا جاسکتا۔کشمیری عوام کی خواہشات اور امنگوں کے مطابق مسئلہ کشمیر کے حل کے بارے مےں پاکستان اپنی سیاسی،اخلاقی اور سفارتی حمایت جاری رکھے ہوئے ہے۔ علی گیلانی نے کہا کہ کشمیر کے سینے پر کھینچی گئی خونیں لکیر ہزاروں کشمیریوں کو نگل گئی اور نگل رہی ہے اور اس کے آرپار آلو پیاز بھیجنے سے منہ بولتے حقائق کو تبدیل نہیں کیاجاسکتا۔