زرداری کے دورہ ملکوال کی جھلکیاں

 O.... پاکستان کھپے کا نعرہ
O.... مارکیٹیں بند، کارکنوں کو پانی نہ مل سکا
 منڈی بہاءالدین+ ملکوال (رانا خوشی سے+ نامہ نگار) صدر زرداری کے اعزاز مےں عید ملن تقریب گورنمنٹ ہائی سکول ملکوال کے گراﺅنڈ مےں ہوئی، پارٹی کارکنوں کو پینے کا پانی بھی نہ مل سکا، سٹےج پر وی آئی پی کی نشستوں اور ڈائس کے گرد بلٹ پروف شیشہ نصب تھا، تقریب مےں شرکت کے لئے مختلف علاقوں سے لوگ ٹولیوں اور جلوسوں کی شکل مےں ڈھول کی تھاپ پر رقص کرتے پنڈال مےں پہنچتے رہے، صدر آصف زرداری، نذر محمد گوندل، قمر زمان کائرہ، میاں منظور وٹو، جہانگیر بدر، ندیم افضل چن ، وسیم افضل چن بلٹ پروف شیشہ کے عقب مےں نشستوں پر بیٹھے تھے۔ پنڈال عید ملن تقریب کی بجائے جلسہ گاہ کا منظر پےش کررہا تھا۔ صدر آصف علی زرداری نے سٹےج پر آکر کھڑے ہوکر ہاتھ ہلاےا تو پنڈال مےں موجود کارکنان نے پُرجوش استقبال کیا۔ عید ملن تقریب کے اطراف میں تین کلومیٹرکے علاقہ کی تمام مارکیٹ دکانیں ریڈزون ایریا کی وجہ سے بند تھیں۔ پنڈال کو پیپلز پارٹی کے جھنڈوں اور استقبالی بےنرز سے سجاےا گیا تھا۔ پیپلز پارٹی کے کارکنان ڈھول کی تھاپ پر رقص کرتے رہے۔ صدر زرداری نے سلام کے بعد پاکستان کھپے سے اپنی تقریر کا آغاز کیا، خطاب 14منٹ تک جاری رہا۔ ملکوال مےں سکیورٹی کے سخت انتظامات، چار ہےلی پےڈ بنائے گئے تھے۔ ذرائع کے مطابق پنڈال مےں آٹھ سے دس ہزار تک کرسیاں تھیں۔ سٹےج اور شرکا کے درمیان خاردار تاروں سے لےس آہنی بےرےر لگائے گئے تھے۔ صدر 3 بج کر 5 منٹ پر تقریب میں پہنچے۔ لوگوں نے صدرزرداری کا پُرتپاک استقبال کیا۔ وہ 4 بجے واپس چلے گئے۔ انتظامیہ نے شہر کی تمام داخلی سڑکیں بند کر دیں۔ موٹر وے کی طرف جانے والی بھیرہ روڈ کو بھی صبح 9بجے بند کر دیا گیا تھا۔ جلسہ گاہ کا مین گیٹ 2بجے بند کر دیا گیا جس کی وجہ سے سینکڑوں کارکن اندر نہ جا سکے۔