سیاسی بحران اور سیلاب سے ملکی معیشت کو 2ارب ڈالر نقصان کا خدشہ

کراچی(این این آئی) سیاسی بحران کے بعد اب پاکستان کو اہم زرعی علاقوں میں سیلاب کے بدترین چیلنج کا سامنا ہے، اب سرمایہ کاروں کو ان سیلابوں کی وجہ سے ملک کی معاشی صورتحال اور لسٹڈ کمپنیوں کی مالی کارکردگی پر اثرات کے بارے میں گہری تشویش ہے۔ تجزیہ کاروں کا خیال ہے کہ سیلاب کی وجہ سے اجناس کی پیداوار اور اس کے بعد مینوفیکچرنگ سیکٹر کی سرگرمی متاثر ہونے کا خدشہ ہے، علاوہ ازیں سروسز سیکٹر میں ٹرانسپورٹیشن کا شعبہ متاثر ہوگا جس کی وجہ سے صنعتوں کی پیداوار متاثر ہوسکتی ہے اور مصنوعات کی قیمتیں بڑھنے کا خدشہ ہے جس کی وجہ سے ملک میں افراط زر کی شرح میں اضافہ ہو سکتا ہے، سروسز سیکٹر کا ملکی جی ڈی پی میں حصہ 58فی صد ہے، اس صورتحال میں ملک کی مجموعی معاشی صورتحال کا جائزہ لیتے ہوئے تجزیہ کاروں کا خیال ہے کہ رواں مالی سال کے دوران ملک کی اقتصادی شرح نمو 4.5فی صد کے ابتدائی اندازوں سے کم ہوکر4.2فی صد رہنے کی توقع ہے۔