باجوڑ: پولیو ٹیم پر حملہ‘ لیویز اہلکار جاں بحق: ڈی آئی خان: 2 بسوں پر فائرنگ‘ 12 افراد زخمی

باجوڑ + ڈیرہ اسماعیل خان (نیوز ایجنسیاں) باجوڑ ایجنسی میں ماموند کے علاقے میں انسداد پولیو ٹیم پر فائرنگ کے نتیجے میں سکیورٹی پر مامور لیویز کا ایک اہلکار جاں بحق ہو گیا۔ پولیٹیکل انتظامیہ کے مطابق انسداد پولیو ٹیم باجوڑ ایجنسی میں ماموند کے علاقہ ڈمہ ڈولہ میں بچوں کو پولیو کے قطرے پلارہی تھی کہ اس دوران نامعلوم مسلح افراد نے ٹیم پر فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں انسداد پولیو ٹیم کی سکیورٹی پر مامور لیویز فورس کا ایک اہلکار جاں بحق ہوگیا۔ مقامی انتظامیہ نے کہا ہے کہ فائرنگ کے واقعے کے بعد بھی پولیو کے قطرے پلائے جانے کا عمل جاری رہے گا۔ وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے فائرنگ کے واقعہ کی شدید مذمت کی ہے۔ علاوہ ازیں پشاور، مانسہرہ سے کوئٹہ اور کوئٹہ سے پشاور جانے والی تین بسوں پر درازندہ اور مغل کوٹ کے قریب دہشت گردوں کی جانب سے اندھا دھند فائرنگ سے 12افراد شدید زخمی ہوگئے، فائرنگ سے بسوں کو شدید نقصان ہوا۔ مسافروں میں ایف سی کے جوانوں کے علاوہ سرکاری ملازمین کی ایک بہت بڑی تعداد شامل تھی۔ ملزمان ڈرائیوروں کو شدید زود کوب کرنے اور رقم لوٹنے کے بعد رات کی تاریکی میں فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔ ادھر تحصیل صافی کے علاقہ زیارت خوڑ میں ماربل گاڑی پر بارودی سرنگ سے حملہ کیا گیا جس کے باعث صافی امن کمیٹی کے رضاکار سمیت 3 افراد زخمی ہوگئے۔ 2 کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے۔ تاہم خوش قسمتی سے ٹرک کے ڈرائیور اور کنڈکٹر بال بال بچ گئے۔ علاوہ ازیں شانگلہ کے تحصیل الپوری کے علاقے دولت کلے بانڈہ کے رہائشی تین کان کن مزدور اورکزئی ایجنسی ہنگو ڈولی میں کوئلے کے کان میں گیس بھرنے سے ہونیوالے دھماکہ میں جاں بحق ہوگئے جبکہ 2 زخمی بھی ہوئے۔ علاوہ ازیں پشاور کے علاقے حیات آباد میں دستی بم حملہ میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ ادھر نوشہرہ میں مسلح افراد کی فائرنگ سے معروف ڈینٹل سپیشلسٹ ڈاکٹر کامران خان زخمی ہوگئے۔