شام میں خفیہ ایٹمی پلانٹ کے قیام کا انکشاف

برلن/دمشق( صباح نیوز)جرمنی کے ایک ہفت روزہ نے دعویٰ کیا ہے کہ شام کے صدر بشارالاسد نے خفیہ طور پر جوہری پلانٹ قائم کیا ہے جس میں بڑے پیمانے پر ایٹمی ہتھیاروں کی تیاری کا کام جاری ہے۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق شامی حکومت نے اس نئی ایٹمی تنصیب میں ایندھن کے آٹھ ہزار سلنڈر منتقل کیے ہیں۔ یہ ایٹمی ری ایکٹر لبنان کی سرحد سے تقریبا دو کلومیٹر دور مغربی شام میں القصیر کے پہاڑی علاقے وعرہ المسالک میں واقع ہے۔جریدے کا دعوی ہے کہ اسے سیٹلائیٹ سے شامی حکومت کے خفیہ ایٹی ری ایکٹر کی تصاویر موصول ہوئی ہیں۔ اس کے علاوہ بین الاقوامی انٹیلی جنس اداروں نے بھی اس کے بارے میں اہم معلومات حاصل کی ہیں۔ دوسری جانب شامی حکومت نے اس الزام کی کوئی تصدیق یا تردید نہیں کی ہے۔