غداری کیس، شریعت کورٹ کی لائبریری میں خصوصی عدالت قائم کرنیکا فیصلہ

غداری کیس،  شریعت  کورٹ کی لائبریری  میں خصوصی  عدالت قائم کرنیکا فیصلہ

اسلام آباد (نوائے وقت رپورٹ)  مشرف غداری کیس کی سماعت  کیلئے خصوصی عدالت  وفاقی  شرعی عدالت  کی نیشنل لائبریری  میں قائم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔  ذرائع کے مطابق  وفاقی سیکرٹری داخلہ  کی طرف سے باضابطہ  درخواست  کے بعد کارروائی  شروع ہو گی۔  حکام کے مطابق  سکیورٹی  وجوہات  پر کنونشن  سنٹر میں خصوصی عدالت  قائم کرنے میں  مشکلات ہیں۔  وفاقی حکومت  کے مطابق  پرویز  مشرف کو فول  پروف  سکیورٹی فراہم کرے گی۔  خصوصی عدالت  جسٹس  فیصل عرب کی سربراہی  میں  قائم کی گئی ہے۔  سابق صدر کے خلاف گزشتہ روز بھی  شکایت درج نہیں کرائی جا سکی  خصوصی  عدالت  کے رجسٹرار  عملے  سمیت 3 بجے تک فیڈرل  شریعت کورٹ  میں رہے۔ دریں اثنا  مشرف کے خلاف ججز  نظربندی کیس  میں چوتھا چالان  مرتب کرنے کا فیصلہ  کر لیا گیا۔  سپیشل  پراسیکیوٹر عامر ندیم تابش  نے چالان  کے لئے پولیس  کو ہدایات  جاری کر دیں۔  میڈیا رپورٹس  کے مطابق سابق صدر  کی جانب سے ججوں کو نظر  بند  کئے جانے  اور ایمرجنسی  کے نفاذ  کے دوران استعمال  ہونے والا آنسو گیس  کا شیل بھی  چالان کا حصہ بنایا جائے گا۔