شیخوپورہ: گٹر میں گر کر جاں بحق ہونیوالی بچی کے لواحقین کا احتجاج، سینہ کوبی

شیخوپورہ (نامہ نگار خصوصی) محلہ نبی پورہ میں گٹر میں گر کر جاں بحق ہونے والی بچی کے ورثاء نے تحصیل کونسل شیخوپورہ کے ذمہ داران اور ضلع حکومت کے افسران کیخلاف احتجاجی ریلی نکالی ریلی میں خواتین کی بڑی تعداد بھی موجود تھی۔ ریلی میں خواتین نے سینہ کوبی بھی کی۔ ریلی مسلم لیگ (ن) کے ضلعی صدر عارف خان سندھیلہ ایم پی اے کی رہائش گاہ پر پہنچ کر احتجاجی جلسہ کی شکل اختیار کر گئی جہاں بچی کے والد یاسین نے صحافیوں کو بتایا کہ علاقہ کے با اثر افراد نے مجھے اپنے گھر بلا کر کہا کہ وزیراعلیٰ کی ٹیم آ رہی ہے اور تمہیں امدادی چیک دے گی لہٰذا سفید کاغذ پر دستخط کر دو اور میرے دستخط کروا لیے۔ انہوں نے بتایا کہ میرے ساتھ انتہائی ظلم ہوا ہے تحصیل کونسل شیخوپورہ کے عملہ کی غفلت لا پرواہی کے باعث میری ڈھائی سالہ بچی حمیرا بغیر ڈھکن کے گٹر میں گر کر جاں بحق ہوئی تو ہم نے اس کی اطلاع تحصیل کونسل اور ریسکیو  1122کو دی جنہوں نے 5گھنٹے کے بعد ہمیں بتایا کہ بچی گٹر میں نہیں ہے بچی کو اغوا کیا گیا ہے۔ پولیس کے پاس جا کر تھوڑی دیر بعد ہم نے دوبارہ گٹر کو توڑ کر دیکھا تو بچی کی نعش گٹر سے برآمد ہوگئی۔ احتجاجی مظاہرین چوہدری طارق محمود گجر،،ملک عارف اعوان،حامد محمود گجر،ملک وسیم الرحمن اعوان،ملک افضل اعوان،ملک سلیم اعوان،محمد امین،محمد سلیم،ملک انیس اعوان،علی اکبر علوی،سیٹھ اشرف ،ذوالفقار علی ،اکرم گجر نے بتایا کہ علاقہ میں سیوریج کا نظام ناقص ہے اکثر سیوریج بند رہتا ہے۔ تحصیل کونسل کی شکایات بھی کی گئی مگر کوئی عملہ نہیں آیا بعض عناصر تحصیل کونسل شیخوپورہ کے عملہ کو بچانے کے لیے من گھڑٹ کہانیاں بنا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر تحصیل کونسل کے عملہ کیخلاف مقدمہ درج نہیں کیا گیا تو وہ وزیراعلیٰ یا گورنر ہائوس جا کر خود سوزی کر لیں گے۔ احتجاج میں شامل خواتین نے تحصیل کونسل کیخلاف سینہ کوبی بھی کی۔ ضلع حکومت اور تحصیل کونسل شیخوپورہ کے ذرائع نے بتایا کہ اڑھائی سالہ حمیرا کی ہلاکت کے واقع کے بارے میں وزیراعلیٰ سیکٹریٹ کو آگاہ کردیا ہے مقامی لوگوں نے خو دہی مین ہول صفائی کیلئے کھولا ہوا تھا جس میں بچی گڑ کر پائپ میں پھنس کر جاں بحق ہوئی ہے اس واقعہ میں کسی سرکاری ادارہ ٹی ایم اے شیخوپورہ کا کوئی قصور نہ ہے۔ مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کروڑوں روپے سیوریج سسٹم پر خرچ کیے گئے مگر تحصیل کونسل کے عملہ کی نااہلی کی وجہ سے سیوریج سسٹم کی دیکھ بھال نہیں ہو رہی شہر کے اکثر علاقوں میں گٹروں کے ڈھکن نہیں ہے جس کی وجہ سے کئی خونی حادثات بھی رونما ہو چکے ہیں۔ گزشتہ روز محلہ نبی پورہ میں ایک محنت کش یاسین کی ڈھائی سالہ بچی کھلے مین ہول میں گر کر جاں بحق ہو گئی تو اس واقعہ پر تحصیل کونسل کیخلاف کاروائی کرنے کی بجائے ان افسران کو تحفظ فراہم کیا جا رہا ہے اس واقعہ کے بارے میں انہوں نے صوبائی اسمبلی میں تحریک التوا بھی جمع کروا دی ہے۔ وہ جلد وزیراعلیٰ پنجاب سے ملاقات کر کے اس تمام صورتحال سے آگاہ کریں گے اور متاثرہ خاندان کو ہرممکن مالی امداد دلائی جائیگی۔