افغانستان میں قتل ہونیوالے 5 تاجروں کی چارسدہ میں تدفین

پشاور (بی بی سی+ نیٹ نیوز) چارسدہ میں ان پانچ تاجروں کی تدفین کردی گئی ہے جن کی نعشیں افغان حکام نے بدھ کو پاکستانی حکام کے حوالے کی تھیں۔ یہ پانچ افراد ان 8 تاجروں میں شامل تھے جنہیں دو ماہ پہلے مسلح افراد نے افغانستان میں اغوا کرلیا تھا۔ انکی نعشیں افغانستان میں غنی خیل کے علاقے سے ملی تھیں جبکہ انکے چار ساتھی تاحال لاپتہ ہیں۔ چارسدہ پولیس کے انسپکٹر عمران خان نے بتایا کہ ایک شخص کی تدفین بدھ کو رات گئے کر دی گئی تھی جبکہ چار افراد جمعرات کو سپردخاک کردئیے گئے ہیں۔ پولیس کے مطابق افغانستان جانیوالے تاجروں کی تعداد 9 تھی جن میں سے 8 افراد کا تعلق چارسدہ کے علاقے پڑانگ سے تھا اور ایک بزرگ تاجر شبقدر سے افغانستان گئے تھے۔ ایسی اطلاعات ہیں۔ ان تاجروں میں ایک ہی خاندان کے پانچ افراد شامل ہیں جبکہ دیگر تین افراد انکے پڑوسی بتائے گئے ہیں۔ پولیس حکام نے بتایا ان کے پاس ایسے کوئی شواہد نہیںکہ ان لوگوں کو تاوان کیلئے اغوا کیا گیا تھا تاہم ایسی اطلاعات ضرور موصول ہوئی ہیں کہ بعض لوگوں نے ان تاجروں کے رشتہ داروں سے کہا تھا وہ انہیں کچھ رقم دیں تاکہ ان افراد کی بازیابی کیلئے وہ افغانستان میں کوششیں کرسکیں۔