محترمہ بے نظیر بھٹو کی یاد میں گورنر ہاﺅس میں شاعری

محمد جمیل
پاکستان کی پہلی خاتون وزیراعظم‘ عوامی رہنما اور پاکستان پیپلزپارٹی کی چیئرپرسن شہید محترمہ بے نظیر بھٹو کی پانچویں برسی کے موقع پر پنجاب کے سابق گورنر سردار محمد لطیف خان کھوسہ نے اکادمی ادبیات پاکستان (پنجاب شاخ) کے تعاون سے گورنر ہاﺅس میں ایک مشاعرے کا اہتمام کیا۔ صدارت ممتاز شاعر ظفر اقبال نے کی جبکہ سردار محمد لطیف خان کھوسہ مہمان خصوصی تھے۔ مشاعرے میں اکادمی ادبیات پاکستان کے ڈائریکٹر جنرل ظہیر الدین ملک کے علاوہ پنجاب اسمبلی کے متعدد ارکان اور دوسو سے زائد سیاسی رہنماﺅں اور کارکن خواتین و حضرات نے شرکت کی۔ پچھلے برس منعقد ہونے والے مشاعرے میں سردار محمد لطیف خان کھوسہ نے شہید بے نظیر بھٹو پوئٹری ایوارڈ کے قیام کا اعلان کیا تھا۔ اس مقصد کے لیے ایک کمیٹی تشکیل دی گئی۔ قاضی جاوید‘ محترمہ پروین ملک اور الطاف احمد قریشی کمیٹی کے ارکان نامزد کیے گئے جبکہ ملتان سے تعلق رکھنے والے ممتاز ادیب‘ نقاد اور افسانہ نگار حفیظ اللہ خان کو کمیٹی کا چیئرمین نامزد کیا گیا۔ کمیٹی کے ارکان کے اجلاس میں تین ممتاز شعراءکا اس ایوارڈ کے لیے انتخاب کیا گیا۔ مشاعرے کے اختتام پر سردار محمد لطیف خان کھوسہ نے کمیٹی کی سفارشات کے تحت ملتان سے تعلق رکھنے والے اردو اور سرائیکی کے ممتاز شاعر ممتاز اطہر‘ اردو اور پنجابی کی ممتاز شاعرہ محترمہ پروین سجل اور ضلع قصور سے پنجابی کے ممتاز شاعر صابر علی صابر کو پچاس پچاس ہزار روپے کے کیش انعامات دیئے۔ انعامات کی تقریب سے قبل بھرپور مشاعرہ ہوا۔ مشاعرے میں شرکت کرنے والے شاعروں میں پروفیسر گلزار بخاری‘ اعزاز احمد آذر‘ اعجاز کنور راجہ‘ ممتاز اطہر‘ محترمہ پروین سجل‘ صابر علی صابر‘ اعجاز رضوی‘ واجد امیر‘ پروفیسر شفیق احمد خان‘ ڈاکٹر ضیاءالحسن‘ غافر شہزاد‘ عبدالعلی شوکت‘ پروفیسر حمیدہ شاہین‘ ڈاکٹر شاہدہ دلاور شاہ‘ جاوید قاسم‘ عابد حسین عابد‘ آفتاب جاوید‘ محترمہ تسنیم کوثر‘ رضا عباس رضا‘ ڈاکٹر طاہر شبیر‘ کامران بھٹہ‘ محترمہ صائمہ الماس‘ اعجاز فیروز اعجاز اور احسن اعزاز شامل تھے مشاعرہ تین گھنٹے تک جاری رہا۔ مشاعرے کے بعد شاعروں اور سامعین کے لیے طعام کا انتظام بھی تھا۔