لاپتہ افراد کیس، چیف جسٹس پشاورہائیکورٹ وزارت داخلہ اور دفاع کے جواب پیش نہ کرنے پر برہم

پشاور (آئی این پی) چیف جسٹس پشاور ہائیکورٹ جسٹس مظہر عالم میاں خیل نے لاپتہ افراد کیس میں وزارت داخلہ اور دفاع کی جانب سے جواب پیش نہ کرنے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ریمارکس دیئے ہیں کہ تین بار موقع دینے کے باوجود بھی جواب نہیں آیا ایسا کیوں کیا جا رہا ہے اگر اس کے باوجود بھی جواب نہیں آیا تو سختی کا راستہ اپنایا جائیگا اور سیکرٹریوں کو عدالت میں طلب کیا جائیگا۔ پشاور ہائیکورٹ کے چیف جسٹس مظہر عالم میاں خیل نے یہ ریمارکس لاپتہ افراد کے حوالے سے کی جانیوالی سماعت کے دوران دئیے۔ چیف جسٹس مظہر عالم میاں خیل اور جسٹس مسز ارشاد قیصر پر مشتمل دو رکنی بنچ نے لاپتہ افراد کے کیس کی سماعت کی۔ چیف جسٹس نے کہا کہ ہم آخری موقع دے رہے ہیں اگر اس کے باوجود بھی نہیں آیا تو سختی کا راستہ اپنایا جائیگا اور سیکرٹریوں کو عدالت میں طلب کیا جائیگا۔ دو رکنی بنچ نے کیس کی سماعت ملتوی کرتے ہوئے وزارت داخلہ، سیکرٹری داخلہ ، ملٹری انٹیلی جنس اور کوہاٹ انٹرمنٹ سنٹر کے انچارج سے اور سائٹ کی رپورٹ اگلی پیشی پر پیش کرنے کے احکامات جاری کردئیے۔