زہریلا کھانا کھانے سے کیڈٹ کالج جامشورو کے 200 طلباء کی حالت خراب

جامشورو (آن لائن) جامشورو کیڈٹ کالج پشاور میں زہریلا کھانا کھانے کے باعث 200 طلباء کی حالت  خراب ہو گئی  جنہیں کالج  ہسپتال اور سی ایم ایچ میں داخل کرایا گیا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق  جامشورو  میں کیڈٹ کالج پشاور کے لگ بھگ 200 طالب علم  جنہوں نے گزشتہ رات کالج کینٹین سے کھانا کھایا تھا ان کی  حالت خراب ہو گئی ہے فوڈ پوائزننگ  کا شکار ہونے والے بچوں  کو ابتدائی طبی امداد کے لئے کالج کے ہسپتال اور سی ایم ایچ ہسپتال میں منتقل کر دیا گیا ہے جہاں کو طبی امداد دی جارہی ہے۔ کالج پرنسپل محمودالہی  نے کہا کہ 50 سے 60 بچے فوڈ پوائزننگ سے متاثر ہوئے ہیں جنہیں کالج  ہسپتال میں طبی امداد دی جا رہی ہے ان میں 2 بچوں کو ڈسچارج کر دیا گیا ہے کالج کے میس انچارج ادریس نے کہا کہ کینٹین سے لگ بھگ  650 طلبا نے کھانا کھایا ان میں سے 150 ان طلباء کی حالت  خراب ہوئی جنہوں نے فاسٹ فوڈ  کھایا۔ اس حوالے سے کباب اور ڈبل روٹی کے نمونے کراچی میں ٹیسٹ  کے لئے بجھوائے گئے ہیں جبکہ پرنسپل کی سربراہی میں واقعہ کی تحقیقات کے لئے انکوائری کمیٹی بھی تشکیل دے دی ہے۔