کوئٹہ: نصیر آباد میں بم دھماکے‘ 2 افراد جاں بحق‘ وزیراعلیٰ کے مشیر عبدالماجد ابڑو زخمی

کوئٹہ: نصیر آباد میں بم دھماکے‘ 2 افراد جاں بحق‘ وزیراعلیٰ کے مشیر عبدالماجد ابڑو زخمی

کوئٹہ (بیورو رپورٹ+ نیوز ایجنسیاں) کوئٹہ اور سبی میں دو بم دھماکوں میں 2 افراد جاںبحق جبکہ وزیراعلیٰ بلوچستان کے مشیر سمیت 14 افراد زخمی ہو گئے۔ پولیس کے مطابق نامعلوم افراد نے مغربی بائی پاس کے علاقے کلی خیزئی چوک کے قریب سڑک کے کنارے دھماکہ خیز مواد نصب کر رکھا تھا۔  دھماکہ اس وقت ہوا جب وہاں سے وزیراعلیٰ بلوچستان کے مشیر اور مسلم لیگ (ن) کے رہنما عبدالماجد ابڑو کی گاڑی گزر رہی تھی، دھماکے کے نتیجے میں عبدالماجد ابڑو اور ان کے دو محافظ زخمی ہو گئے۔ پولیس کے مطابق  دھماکے کے لئے دو سے تین کلو دھماکہ خیز مواد استعمال کیا گیا۔ دھماکے کے بعد پولیس نے علاقہ کی ناکہ بندی کر کے سرچ آپریشن شروع کر دیا۔ ادھر ایک دوسرے واقعہ میں ضلع نصیرآباد کے علاقے نوتل میں ریموٹ کنٹرول دھماکے میں دو افراد جاںبحق ہو گئے جبکہ 11افراد زخمی ہوئے۔ ادھر ایران سے متصل ضلع پنجگور میں پولیس اور فرنٹیئر کور کے دو اہلکار ایک دوسرے پر فائرنگ سے ہلاک ہو گئے۔ دوسری جانب کالعدم بلوچ عسکریت پسند تنظیم بلوچ ریپبلکن آرمی نے گذشتہ روز ہونے والی جھڑپ میں اپنے دو کارکنوں کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے۔ دریں اثناء بولان میڈیکل کمپلیکس ہسپتال کے قریب قائم مدرسے میں طالب علم نے معمولی تکرار پر اپنے ساتھی کو خنجروں کے وار کر کے قتل کر دیا۔ علاوہ ازیں بم دھماکوں کی وارداتوں میں ملوث ہونے کے شبے میں 4 نوجوانوں کو گرفتار کر لیا گیا۔ پولیس کے مطابق گرفتار لڑکوں کی عمریں 12 اور 15 سال کے درمیان ہیں۔ پولیس نے دعویٰ کیا کہ ملزمان نے مختلف علاقوں میں ہونے والے بم دھماکوں کا بھی اعتراف کیا۔ علاوہ ازیں کوئٹہ ریلوے پولیس نے جعفر ایکسپریس پر چھاپہ مارکر ایک شخص کو گرفتار کرکے اسکے قبضے سے چرس برآمد کرلی۔ وزیراعلیٰ بلوچستان ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ نے عبدالماجد ابڑو کی گاڑی پر ریموٹ کنٹرول بم حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے اور انتظامیہ کو ہدایت جاری کی کہ وہ واقعہ کی رپورٹ فوراً پیش کریں۔ انہوں نے فون کرکے عبدالماجد ابڑو کی خیریت دریافت کی۔