میانمار میں کشیدگی برقرار‘مزید 2 مسلمان جاںبحق‘ 2 گھر بھی جلا دیئے گئے

میانمار میں کشیدگی برقرار‘مزید 2 مسلمان جاںبحق‘ 2 گھر بھی جلا دیئے گئے

ینگون  (اے ایف پی + این این آئی) میانمار کی رفائن  ریاست کے گائوں  پر انتہا پسند بودھوں کے حملے میں مزید 2 مسلمان جاںبحق ہو گئے۔ 3 روز میں جاںبحق  ہونے والوں کی تعداد 7 ہو گئیں، پولیس نے بلوائیوں کو منتشر کرنے کے لئے فائرنگ کی۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق حملوں کے خوف سے بیسیوں مسلمان روپوش ہو گئے۔ آن لائن کے مطابق امریکی سفارتخانے سے جاری بیان میں کہا گیا ہے مسلمانوں کو تحفظ فراہم کیا اور ذمہ داروں کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے۔ ذرائع نے بتایا وزیراعظم  فرقہ وارانہ  تشدد روکنے میں ناکام رہے۔ پولیس بھی لاتعلق رہی۔ 6 افراد کو گرفتار کر لیا گیا۔ مسلمانوں کے مزید 2 گھر جلا دیئے گئے۔ صدر تھان سین نے صورتحال نارمل کرنے کے لئے متاثرہ علاقے کے رہائشیوں سے ملاقاتیں کی ہیں۔ ثناء نیوز کے مطابق تازہ حملے اس وقت شروع ہوئے جب ایک بودھ ٹیکسی ڈرائیور نے شکایت کی کہ ایک مسلمان نے بد تمیزی کی ہے۔ اس کے بعد مسلمانوں کی املاک پر حملے کئے گئے اور بعد میں مسلمانوں پر تشدد کیا گیا۔ عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ پولیس نے حملہ آوروں کو روکنے کی کوشش نہیں کی۔ تقریباً سات سو بودھوں نے حملہ کیا جن کے ہاتھوں میں تلواریں تھیں۔