بلوچستان: زلزلہ متاثرین کی مشکلات میں اضافہ، بیماریاں پھیلنے کا خدشہ

آواران ( آئی این پی )  زلزلہ زدہ بلوچستان میں رہائشی سہولتوں کے فقدان، اشیائے خورونوش کی قلت اور بجلی کی عدم فراہمی کے سبب امدادی کارکنوں کے ساتھ ساتھ زلزلہ متاثرہ علاقوں کے رہائشیوں کی مشکلات میں اضافہ ہو گیا ہے۔ وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ بیماریاں پھیلنے کے خطرہ میں بھی اضافہ ہو گیا ہے۔ جماعۃ الدعوۃ کے فلاحی ادارے فلاح انسانیت فائونڈیشن کے ریلیف کیمپ سے زلزلہ متاثرین کے ساتھ ساتھ دیگر اداروں کے رضاکاروں کو بھی کھانے کی فراہمی جاری ہے۔ زلزلے سے متاثرہ ضلع آواران کی تحصیل مشکے میں پینے کے صاف پانی کی شدید قلت ہے اور ڈاکٹروں کے مطابق آلودہ پانی پینے سے متاثرین بیمار پڑ رہے ہیں۔ مشکے میں پینے کا پانی کنوؤں سے حاصل کیا جاتا تھا جو زلزلے کے بعد مٹی سے بھر گئے، لوگوں نے مجبوراً برساتی نالوں اور ندی کے پانی کا استعمال شروع کر دیا۔ مشکے میں قائم فلاح انسانیت فائونڈیشن کے رضا کار ڈاکٹر ناصر ہمدانی کے مطابق آلودہ پانی پینے سے لوگوں میں اسہال اور دست کی بیماری پھیل رہی ہے۔ جماعۃ الدعوۃ کے میڈیکل کیمپوں پر سپیشلسٹ ڈاکٹر وں و پیرا میڈیکل اسٹاف کی ٹیمیں متاثرین کو ابتدائی طبی امداد فراہم کر رہی ہیں۔ ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر آواران میں رہائشی ہوٹل اور کھانے پینے کے لیے کوئی ریسٹورنٹ موجود نہیں۔