حکومت عمران کے مطالبات پر درمیانی راستہ نکالنا چاہے تو آج بھی کچھ نہیں بگڑا: کائرہ

حکومت عمران کے مطالبات پر درمیانی راستہ نکالنا چاہے تو آج بھی کچھ نہیں بگڑا: کائرہ

لاہور (آئی این پی) پاکستان پیپلز پارٹی کے مر کزی سیکرٹر ی اطلا عات قمر الزمان کائرہ نے کہا ہے کہ آصف زرداری نے حکومت کو سیاسی ایشو کا سیاسی حل ڈھونڈنے کا مشورہ دیا تھا‘حکومت نے طاہر القادری اور عمران خان کا ایشو مس ہینڈل کیا ہے‘ حکو مت عمران خان کے مطالبات پر دمیانی راستہ نکالنا چاہے تو آج بھی کچھ نہیں بگڑا‘ درمیانی راستہ نکالنے کیلئے وزارت قانون الیکشن کمیشن کو خط لکھ سکتی ہے کہ قانون کے مطابق الیکشن ٹریبونلز چار مہینے میں فیصلوں کے پابند ہیں، روزانہ کی بنیاد پر سماعت کر کے تمام کیسز کے جلد از جلد فیصلے کئے جائیں‘ وفاقی معاملات کو وفاقی حکومت کو ڈیل کرنا چاہئے، ایک صوبے کے وزیراعلیٰ کو نہیں۔ میڈیا سے گفتگو میں انہوں نے کہا کہ یہ بات درست ہے کہ الیکشن ٹریبونلز حکومت نے نہیں الیکشن کمیشن نے بنائے مگر حکومت کو یہ معاملہ ڈی فیوز کرنے کیلئے کام کرنا چاہئے تھا۔ آصف زرداری نے بادشاہی والی بات پارلیمنٹری ایشوز کے حوالے سے کی‘ حکومت آرڈیننسوں کے ذریعے قانون سازی کے بجائے پارلیمنٹ سے قانون سازی کرائے۔ وفاقی معاملات کو وفاقی حکومت کو ڈیل کرنا چاہئے ، اگر ایک صوبے کا وزیراعلیٰ وفاق کے فیصلے کرتا نظر آئیگا وہ پانی و بجلی کے فیصلے بھی کریگا، وہ پاکستانی تجارت کے فیصلے بھی کریگا تو وہ یہ کام نہ کریں۔ انہوں نے کہا پیپلز پارٹی کے دورِ حکومت میں پنجاب حکومت نے طاہر القادری کے لوگوں کو اسلام آباد تک آنے کیلئے سہولیات دیں‘ مسلم لیگ (ن) نے اس وقت طاہر القادری کو فری ہینڈ دیا تھا، اب عمران خان کو بھی فری ہینڈ دیدیں کہ وہ پنجاب سے اکٹھے ہو کر آجائیں۔