عمران حکومت، فوج میں اختلاف چاہتے ہیں، آرٹیکل 6 کے تحت کارروائی کی جائے: عابد شیر

فیصل آباد (نمائندہ خصوصی) وزیرمملکت پانی و بجلی عابد شیر علی نے کہا ہے کہ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان حکومت اور فوج کے درمیان اختلافات پیدا کرنا چاہتے ہیں لہٰذا ان کیخلاف آرٹیکل 6کے تحت کارروائی عمل میں لائی جائے۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عابد شیر علی نے کہاکہ قوم سے غداری کرنے پر عمران خان کیخلاف آرٹیکل 6کے تحت کارروائی کی جانی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان حکومت اور ریاستی اداروں کے مابین اختلافات پیدا کرنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ عمران خان دفاعی اداروں کو اقتدار میں آنے کیلئے استعمال کر رہے ہیں۔ عابد شیر علی نے حکومت کیخلاف احتجاج کرنے والی سیاسی جماعتوں پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ چودھری پرویز الٰہی اصل فسا د کی جڑ ہیں۔ انہوں نے سوال کیا کہ شیخ رشید جو چار لوگوں کو اپنی لال حویلی میں اکٹھا نہیں کر سکتے وہ کیسے ٹرین مارچ چلائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ لندن میں اتحاد کرنے والے تمام لوگ سیاسی یتیم ہیں۔ چوہدری برادران پرویزمشرف کی گود میں بیٹھ کر اقتدار کے مزے لوٹتے رہے اور سو بار بھی پرویزمشرف کو وردی میں صدر منتخب کرنے کے نعرے لگاتے رہے لیکن عوام انہیں مسترد کرچکے ہیں۔ ثناء نیوز کے مطابق عابد شیر علی نے کہا ہے کہ احتجاج کرنے والوں کو یہ تکلیف ہے کہ پاکستان ترقی کیوں کر رہا ہے۔ عمران خان کو چیلنج کرتا ہوں وہ خیبر  پی کے میں انگوٹھوں کے نشانات کی تصدیق کرالیں ۔ چار حلقوں کی بنیاد پر ملکی ترقی کو سبوتاژ کرنے کی اجازت ہرگز نہیں دی جائے گی۔ کینیڈین شہری سے کہنا چاہتا ہوں یہ پی پی کا دور نہیں کہ دھرنا دے کر اور ڈیل کر کے واپس کینیڈا چلے جائیں گے آپ نے ملکہ برطانیہ سے وفاداری کا حلف لیا ہے نہ کہ پاکستان کے قرآن و سنت کے آئین پر۔ ہم کسی غیر ملکی شہری کو پاکستان کا امن تباہ کرنے کی اجازت نہیں دیں گے۔ مسلم لیگ (ن) 12سال کی خرابیوں کو دور کر رہی ہے۔ خزانہ خالی ہو چکا تھا کوئی سرمایہ کار پاکستان آنے کو تیار نہیں تھا  آج چینی، ترک اور دیگر ملکوں کے سرمایہ کار پاکستان آ رہے ہیں اور بجلی کے کارخانے لگا رہے ہیں۔  احتجاج کرنے والے  اپنی باری کا انتظار کریں۔ سرگودھا سے آئی این پی کے مطابق وزیر مملکت برائے پانی و بجلی عابد شیر علی نے تمام سرکاری محکموں سے واجبات کی تفصیلات 5 جون تک طلب کر لیں۔ محکمہ واپڈا کے ذرائع کے مطابق تمام محکموں کے سربراہان کو ہدایات جاری کی گئی ہیں کہ وہ اپنے واجبات 30 جون تک ادا کردیں بصورت دیگر ان کی بجلی کی سپلائی منقطع کر دی جائیگی۔