عالمی قوتیں مذہبی اداروں کو اپنے مفاد کیلئے بدنام کر رہی ہیں: فضل الرحمن

پشاور (نوائے وقت رپورٹ + نیوز ایجنسیاں) جمعیت علماء اسلام ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے بین الاقوامی قوتیں مذہب اور مذہبی اداروں کو اپنے مفاد کیلئے بدنام کر رہی ہیں۔ جوش سے نہیں حکمت سے مقابلہ کرنا ہوگا۔ جمعیت علماء اسلام ف کے صوبائی سیکرٹریٹ پشاور میں طالب علموں کی دستار بندی کی تقریب سے خطاب کرتے فضل الرحمن نے کہا کہ مدارس اور علماء کو دہشت گرد قرار دینے والے احمقوں کی جنت میں رہتے ہیں۔ بندوق اور ڈنڈا نہیں بلکہ مشاورت ہی مسئلے کا حل ہے۔ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں گذشتہ 10 سال کے دوران 55 ہزار پاکستانی جاں بحق ہوئے ہیں۔ اسکے علاوہ 80 ارب ڈالر کا مالی نقصان ہوچکا ہے۔ امریکہ شدت پسند ہے جو طاقت کے نشے میں معاشی عدم استحکام کا شکار ملکوں پر  حملے کر رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ اور یہودی لابی دنیا کے وسائل پر قبضہ کا خواب دیکھ رہے ہیں اور پوری دنیا کے وسائل پر قبضہ کرنا چاہتے ہیں۔ سنجیدہ مذاکرات امن فراہم کر سکتے ہیں۔ غیرسنجیدہ اقدامات حالات کو مزید بگڑنے کی طرف لے جا رہے ہیں۔ مسلمانوں کو دہشت گرد کہنے والے خود بین الاقوامی دہشت گرد ہیں۔