فیصل آباد کے رنگ ڈھنگ

کالم نگار  |  ادیب جاودانی
فیصل آباد کے رنگ ڈھنگ

دو روز پیشتر راقم کو پاکستان کے تیسرے بڑے شہر فیصل آباد جانے کا اتفاق ہوا‘ وہاں جانے کا مقصد مون لائٹ سکول چاندنی چوک غلام محمد آباد فیصل آباد میں ڈینگی وائرس کے انسداد کے سلسلے میں منعقدہ ایک تقریب سے خطاب کرنا تھا‘ اس تقریب کے مہمان خصوصی ڈویژنل کمشنر سردار اکرم جاوید تھے۔ انہوں نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ڈینگی وائرس ایک آفت ہے‘ اس آفت کا مقابلہ معاشرے کے تمام طبقات کے فعال رول ادا کرنے سے ہی ممکن ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس مہم کا بنیادی مقصد ہی لوگوں میں صفائی کی اہمیت اور اس کے بارے میں شعور پیدا کرنا ہے۔ اس مہم میں ذرائع ابلاغ بہت اہم رول ادا کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پولیو کے خاتمے کیلئے ہم سب نے مل کر اپنا کردار ادا کرنا ہے پھول جیسے بچوں کو پولیو سے بچانے کیلئے دو قطرے پلا کر ہم اپنا فریضہ ادا کرسکتے ہیں۔
 تقریب کے بعد ڈویژنل کمشنر سردار اکرم جاوید سے فیصل آباد میں امن و امان کی صورت حال کے حوالے سے بھی بات چیت ہوئی ان کا کہنا تھا کہ اس میں شک نہیں کہ فیصل آباد میں سٹریٹ کرائمز میں قدرے اضافہ ہوا ہے لیکن اس کی بڑی وجہ فیصل آباد میں لوڈشیڈنگ کے باعث بہت سے صنعتی اور کاروباری اداروں کا بند ہو جانا ہے۔ ان کی بندش کی وجہ سے ہزاروں لوگ بے روزگار ہوگئے ہیں۔ بے روزگاری سے تنگ آ کر وہ جرائم کی طرف راغب ہو رہے ہیں۔ فیصل آباد کے آر پی او نواز وڑائچ سے بھی جرائم کے حوالے سے راقم کی بات ہوئی۔ ان کا کہنا تھا کہ پولیس اپنے طور پر جو جرائم کو کنٹرول کرنے کیلئے بھرپور کوششیں کر رہی ہے۔ اس سلسلے میں نئے پولیس آفیسران بھی تعینات کئے گئے ہیں لیکن اصل بات یہ ہے کہ جب تک جرائم کے بنیادی عوامل کو ختم نہیں کیا جاتا‘ جرائم میںکمی ہونا بہت مشکل ہے۔
فیصل آباد میں راقم کی صنعتکاروں سے بھی ملاقات ہوئی ان کا کہنا تھا کہ فیصل آباد کی بدترین لوڈشیڈنگ نے کاروبار کو ٹھپ اور معمولات زندگی کو بے حد متاثر کردیا ہے۔ جہاں ایک جانب عوام مسائل کا شکار ہیں تو دوسری جانب صنعتوں کا پہیہ جام ہو چکا ہے جو ملکی معیشت کیلئے انتہائی نقصان دہ ہے بجلی کی قیمتوں میں مزید اضافہ غریب کے منہ سے لقمہ چھیننے کے مترادف ہے۔ گیس کمپنیوں نے یکم جولائی سے قیمتوں میں اضافہ کا مطالبہ کردیا ہے‘ سوئی سدرن کی 24 فیصد اور سوئی ناردرن کی 47 فیصد تک گیس کی قیمتوں میں اضافے کی درخواستیں اوگرا کو موصول ہو چکی ہیں۔ گیس کمپنیوں کے مطالبے پر یکم جولائی سے قیمتوں میں ممکنہ اضافے کے غریب عوام کیونکر متحمل ہو پائیں گے اس کا تصور ہی سوہان روح ہے۔ حکومت اپنے انتخابی وعدوں کی پاسداری کرتے ہوئے انہیں ریلیف پہنچانے کی ہر ممکن کوشش کرے کیونکہ اگر اب بھی مہنگائی سے ستائے ہوئے عوام کو ریلیف فراہم کرنے کیلئے حکومت نے انقلابی اقدامات نہ کئے تو پھر اسے نوشتہ دیوار پڑھ لینا چاہیئے کہ عوام ایک سال سے نالاں ہو چکے ہیں۔
امن مذاکرات کے سلسلے میں روزنامہ ایکسپریس فیصل آباد کے ریذیڈنٹ ایڈیٹر نواز ڈوگر‘ روزنامہ دنیا فیصل آباد کے ریذیڈنٹ ایڈیٹر غلام محی الدین ‘ روزنامہ نوائے وقت فیصل آباد کے بیورو چیف احمد کمال نظامی‘ روزنامہ امن فیصل آباد کے ایڈیٹر انتظار مہدی‘ ڈیلی بزنس رپورٹ فیصل آباد کے مینجنگ ایڈیٹر ہمایوں طارق سے بات چیت ہوئی ان کا کہنا تھا کہ حکومت کو اپنے ہوش و حواس قائم رکھتے ہوئے ان طاقتوں پر بھی نظر رکھنی چاہیئے جو ملک میں امن کے خلاف ہیں اور اپنے عزائم کی تکمیل کیلئے دھماکے کرواتی ہیں جس کا ثبوت طالبان سے مذاکرات کے دوسرے اہم ترین مرحلے کے آغاز پر ہی کوئٹہ اور پشاور میں ہونے والے دھماکے ہیں جس کا مقصد یقیناً مذاکراتی عمل کو سبوتاژ کرنے کے سوا دوسرا کوئی ہو نہیں سکتا۔ اسی طرح طالبان کو بھی حکومت کی جانب سے نیک نیتی کے ساتھ امن کے قیام کیلئے کی جانے والی کوششوں کا مثبت جواب دینا چاہیئے۔ تاہم اب وقت آگیا ہے کہ حکومت ملک دشمن طاقتوں کے ہمیشہ ایک قدم آگے رہنے کے تاثر کو ختم کرے اور ان کے ناپاک عزائم کو خاک میں ملانے کیلئے ایک ٹھوس اور جامع حکمت عملی مرتب کرے تاکہ ملک میں امن و امان کی خواہش کو عملی جامہ پہنایا جاسکے۔
دورہ فیصل آباد کے بعد راقم نے حضرت ابوانیس صوفی محمدبرکت علی لدھیانویؒ کے مزار پر حاضری دی اور فاتحہ خوانی کی‘ لوگ ہر وقت مزار پر فاتحہ خوانی و قرآن خوانی اور ذکر الٰہی میں مصروف رہتے ہیں۔ فیض عالم کے یہ سلسلے 24 گھنٹے چلتے رہتے ہیں۔