پاکستان انٹرنیشنل اسکول، سالانہ تقسیم ایوارڈ تقریب

صحافی  |  امیر محمد خان

پاکستان انٹرنیشنل اسکول، انگلش سیکشن میں تقسیم ایوارڈ کی سالانہ تقریب منعقد ہوئی۔ مہمانانِ گرامی میں سفیر پاکستان محمد نعیم خان، قونصل جنرل آفتاب کھوکر، ڈاکٹر غلام اکبر نیازی، علی الجاسر مینیجر آف ریذیڈنٹ ریلیشن کنگ عبدالعزیز نیشنل سٹی جدہ جو کہ عربی کے معروف شاعر بھی ہیں کے علاوہ اساتذہ، طلبہ و طالبات کے والدین، میڈیا اور کمیونٹی کے معزز اراکین بھی موجود تھے۔ تقریب کا آغاز تلاوت کلام پاک سے ہوا۔ بعدازاں دونوں ملکوں کے قومی ترانے بجائے گئے۔ اسکول کی پرنسپل، سینیٹر مسز سحر کامران نے اپنے خطاب میںمعزز مہمانوں، والدین، اساتذہ ¿کرام اور طلبہ و طالبات کو خوش آمدیدکیا اور کہا کہ یہ میرے لئے انتہائی مسرت کا باعث ہے کہ آج میں ان طلبہ و طالبات کے درمیان موجود ہوں جووطن عزیز کے مستقبل کے معمار ہیں۔ ہمارے تمام اساتذہ اور عملے کے ارکان لائق تحسین ہیں جنہوں نے اسکول کے ایک اور تعلیمی سال کی شاندار کامیابی کیلئے خدمات انجام دیں۔
انہوں نے طالب علموں کو نصیحت کرتے ہوئے کہاکہ وہ درخشاںمستقبل کی ضمانت کے لئے قائد اعظم کے رہنما اصولوں ایمان، اتحاد اور تنظیم کو اپنائیں۔ انہوں نے تقریب میں شریک سعودی بہن بھائیوںکا بھی شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ میری دعا ہے کہ اللہ کریم اس مملکت کو خادم حرمین شریفین کی بصیرت افروزقیادت میں خوشحالی اور ترقی کی نعمتوں سے نوازے اور امت مسلمہ کے عظیم قائدشاہ عبداللہ بن عبدالعزیزکو صحت و عافیت اوردرازعمر عطا فرمائے۔ پرنسپل، سنیٹر سحر کامران کے خطاب کے بعدCIE کے علاوہ، تیسری جماعت سے اے لیول تک کے امتحانات میں نمایاں پوزیشنز حاصل کرنے والے طلبہ و طالبات میں اسناد اور تمغے تقسیم کئے گئے اور اسٹوڈنٹس کونسل کے اراکین کو انکی بہترین کارکردگی پر شیلڈ پیش کی گئی۔ تقسیم ِ ایوارڈز کے دوران ملی نغموں کے علاوہ مشہور ڈرامے’میکبیتھ‘ اور ہیر رانجھا بھی پیش کئے گئے جنہیںبے حد پذیرائی ملی۔ بعد ازاں سنیٹر سحر کامران کی جانب سے سربراہ مملکت خادم حرمین الشریفین شاہ عبداللہ کی شخصیت پرسیر حاصل تصنیف وضع کرنے پر معروف شاعر علی الجاسر نے سنیٹر سحر کامران کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے ایک نظم بعنوان " وہ ہمارے باپ، قائد اور فخر ابن امام ہیں" پیش کی۔ پروگرام کے آخر میںسفیر پاکستان محمد نعیم خان نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے تمام کامیاب طلبہ و طالبات کو مبارک باد پیش کی اور کہا کہ مجھے یہاں آکر بے حد خوشی ہوئی ہے۔ یہ اسکول ایک بے مثال ادارہ بن چکا ہے جس کیلئے سینیٹر سحر کامران اور انکی قائدانہ صلاحیتیں قابل تعریف ہیں۔ ہمیں فخر ہے کہ یہ ادارہ بچوں کو مثالی تعلیم سے سرفراز کر رہا ہے۔ آج کی سالانہ تقریب بے مثال ہے جو انتہائی منظم اور پیشہ ورانہ انداز میں منعقد کی گئی ہے۔ میں انکی اس کارکردگی سے بہت متاثر ہوا ہوں۔ طلبہ و طالبات نے اپنی کارکردگی کے ذریعے اپنی صلاحیتوں کی عکاسی کی ہے جو پرنسپل سحر کامران اور اساتذہ کی محنت کا مظہر ہے۔ انھوںنے شاندار کارکردگی پر ایوارڈحاصل کرنیوالے طلبہ و طالبات کے علاوہ”میکبیتھ“اور ”ہیر رانجھا“میں پرفارم کرنے والوں کو بھی انکی خوبصورت اداکاری پر مبارکباد پیش کی۔ طلبہ و طالبات کو نصیحت کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ محنت کریں، اپنی تعلیم پر توجہ دیں، اچھے مسلمان بنیں اور اپنا قیمتی وقت ضائع نہ کریں۔ انھوں نے والدین پر بھی زوردیتے ہوئے کہا کہ وہ اپنے بچوں کی تعلیم میں سرمایہ کاری کریں کیونکہ سب سے بہترین سرمایہ کاری یہی ہے۔میں یہ بھی کہنا چاہوں گا کہ سعودی عرب میں رہتے ہوئے ہم ایک منفرد حیثیت میں ہیں کیونکہ اس طرح ہم پاکستانی اور سعودی،دو معاشروںکا حصہ ہیں۔ ہمیں اپنے بچوں کو اس انداز میں تربیت فراہم کرنی چاہئے کہ وہ ان دونوں معاشروں کا موثر حصہ ثابت ہو سکیں۔