بھارت نے اپنے سفارتی مشنوں کے ذریعے پاکستان کیخلاف پروپیگنڈہ مہم تیز کر دی

لندن (تحقیقاتی رپورٹ: خالد ایچ لودھی) بھارت کی وزارت خارجہ کی جانب سے یورپی ممالک میں بھارتی سفارتی مشنوں کو پاکستان کے حوالے سے گمراہ کن مواد پر مبنی رپورٹس فراہم کی جا رہی ہیں۔ ان رپورٹس کو مختلف ذرائع سے برطانوی اور دیگر یورپی میڈیا گروپس کو پراپیگنڈے کے غرض سے فراہم کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔ ان مقاصد کے لئے بھارتی سفارت خانوں کے پریس ڈیپارٹمنٹ پبلک ریلیشن کمپنیوں کو بھی استعمال کر رہے ہیں۔ بلوچستان میں گوادر پورٹ کو چین کے حوالے کرنے کے بارے میں انتہائی بے بنیاد اور حقائق کے منافی معلومات جاری کی گئی ہیں جن میں بھارت کی پاکستان دشمنی کی واضح عکاسی ہوتی ہے۔ تفصیلات کے مطابق یہ رپورٹس بھارتی خفیہ ایجنسی ”را“ کے حوالے سے فراہم کی جا رہی ہیں ان میں سرزمین پاکستان پر چین کو فوجی اڈوں کی فراہمی کا بے بنیاد پروپیگنڈا کیا گیا ہے۔ ان تمام معلومات پر برطانیہ، جرمنی اور فرانس کے عسکری تھنک ٹینک حیرت کا اظہار کر رہے ہیں ان کے مطابق بھارتی معلومات جھوٹ کا پلندہ ہیں اور یہ بھارتی خفیہ ایجنسی ”را“ کا کارنامہ ہے۔ چین جو کہ دنیا کا امن پسند ملک ہے اور بین الاقوامی سطح پر چین تجارت اور معیشت کے حوالے سے منفرد حیثیت کا حامل ہے۔ پاکستان میں بلوچستان کا علاقہ انتہائی حساس اہمیت کا حامل ہے اور اس علاقے میں گوادر پورٹ تک چین کی رسائی خطے میں انتہائی اہم تبدیلی قرار پائی ہے۔ جس سے چین کو دنیا کے دیگر ممالک کے ساتھ تجارتی راہداریوں میں بے پناہ سہولتیں میسر آ گئی ہیں جس کے نتیجے میں قدرتی طور پر پاکستان کی جغرافیائی اہمیت میں اضافہ ہوا ہے اور آنے والے سالوں میں پاکستان اپنی معاشی دشواریوں سے چھٹکارا حاصل کر لے گا جو کہ بھارت کو کسی طرح بھی قبول نہیں۔ چین کی پاکستان کے ساتھ بڑھتی ہوئی قربت بھارت کو پریشان کر رہی ہے۔
مہم تیز