طالبان کے دن گنے جاچکے ہیں: رحمن ملک

لندن (آصف محمود سے) وفاقی وزیر داخلہ رحمان ملک نے کہا ہے کہ طالبان کے دن گنے جاچکے ہیں\\\' میں ان کو وارننگ دینا چاہتا ہوں کہ وہ ہتھیار ڈال دیں ورنہ نتائج کیلئے تیار ہوجائیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین سے ساڑھے چار گھنٹے کی طویل ملاقات کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران کیا۔ رحمان ملک نے الطاف حسین کو یقین دلاتے ہوئے کہا کہ طالبانائزیشن نہیں بڑھے گی۔ کراچی ہر ایک کا شہر ہے\\\' جو آج الطاف حسین کی محنت اور بہترین حکمت عملی سے بڑی تباہی سے بچا۔ انہوں نے کہا کہ ڈرگ مافیا اور لینڈ مافیا کا بندہ کسی بھی جماعت سے ہوا\\\' اسکے خلاف ایکشن لیں گے اور اس حوالے سے کراچی کا امن و امان ہر صورت یقینی بنانے کیلئے انہیں الطاف حسین کی مکمل آشیرباد حاصل ہے۔ رحمان ملک نے کہا کہ وہ وزیراعظم کے حکم پر ایک خصوصی ایلچی کے طور پر الطاف حسین کو لندن ملنے آئے اور انکی نیک خواہشات کا پیغام پہنچایا۔ انکا کہنا تھا کہ اندرونی و بیرونی معاملات میں ہمیشہ ہر جماعت کو اعتماد میں لیا۔ انہوں نے کہا کہ انکی اہم بلوچ رہنماﺅں سے ملاقاتیں ہوچکی ہیں۔ براہمداغ بگٹی کے والد نے پاکستان کیلئے بڑی قربانیاں دی ہیں۔ انک کہنا چاہتا ہوں کہ وہ اپنی بات کریں\\\' ہم انکے مطالبات ماننے اور انکا حق دینا چاہتے ہیں۔ ہمارے ساتھ صرف پاکستان کی بات کریں نہ کہ بلوچستان کی۔ رحمان ملک نے کہا کہ میں امریکہ کو بتانا چاہتا ہوں کہ ہم پاکستان میں بیٹھے ہیں\\\' ہمیں پتہ ہے کہ دشمن کون ہے اور انکے خلاف کیا کرنا چاہتا ہے۔ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے الطاف حسین نے کہا کہ پاکستان کے عوام طالبان کی خودساختہ اور ڈنڈا بردار شریعت کو نہیں مانتے۔ پاکستان کے عوام ماڈریٹ\\\' لبرل اور ڈیموکریٹ ہیں۔ طالبان کو شریعت نہیں چاہئے\\\' انکا ایجنڈا پاکستان کو توڑنا ہے۔ حکومت نے نظام عدل ریگولیشن کو متفقہ طور پر منظور کیا۔ صدر مملکت نے دستخط کئے تو پوچھتا ہوں کہ اسکے باوجود علاقے میں امن کیوں بحال نہیں ہوا؟ معاہدے کے بعد طالبان کی کارروائیاں کم ہونے کی بجائے زیادہ ہوگئیں۔ الطاف حسین نے کہا کہ لینڈ مافیا کو پیشہ بھی کراچی میں موجود طالبان فراہم کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ رحمان ملک نے انہیں یقین دلایا ہے کہ وہ دورہ امریکہ کے بعد کراچی جائیں گے اور ہماری طرف سے دئیے گئے شواہد پر ذمہ داروں کیخلاف کارروائی کریں گے۔ الطاف حسین نے کہا کہ اب تو نوازشریف اور شہبازشریف بھی طالبان کیخلاف بول رہے ہیں۔