امریکہ اور ہمارے حکمران

مکرمی! جس طرح پاکستان کی معیشت‘ زراعت پر انحصار کرتی ہے اسی طرح امریکی معیشت اسلحے کی پیداوار کے سہارے کھڑی ہے۔ امریکی اسلحہ ساز کارخانے روزانہ لاکھوں ڈالر مالیت کا اسلحہ اگل رہے ہیں جو رب کائنات کی اس دھرتی پر آتش و آہن بن کر برس رہا ہے۔ ڈالر اور امریکہ میں بہت کشش ہے۔ یادش بخیر: چند سال پہلے ایک امریکی عہدیدار نے کہا تھا پاکستان ڈالر کی خاطر اپنی ماں بھی فروخت کر سکتے ہیں۔ ہمارے حکمران ایک آزاد و خود مختار ملک کے معاملات چلا رہے ہیں۔ اس میں شک نہیں اس کا مینڈیٹ انہیں عوام نے دیا لیکن جب یہ حکمران قوم کے نام خطاب کرتے ہیں تو ان کے الفاظ اور لہجے میں اک لجاجت ہوتی ہے امریکہ کے لئے عزم اور ایسی بات نہیں ہوتی جس سے عوام کے دلوں میں حوصلہ اور عزم کی لہریں اٹھیں۔ سوات امن معاہدہ پاکستان کے معروضی حالات میں ایک اچھا قدم تھا۔ امریکہ اس کے سخت خلاف تھا۔ پھر طالبان نے وہ کھیل کھیلا کہ حکومت معاہدہ امن امریکہ کی خواہش کے مطابق ختم کرنے پر مجبور ہو گئی اور اس وقت جبکہ یہ سطور شائع ہو کر منظر عام پر آرہی ہیں۔ سوات‘ بونیر اور گردونواح میں فوجی آپریشن جاری ہے۔ امریکی اسلحہ بک رہا ہے اور ڈالر مستحکم ہو رہا ہے۔ (نیئر صدف دھرمپورہ لاہور )