ایٹمی دھماکہ

ایڈیٹر  |  ڈاک ایڈیٹر
ایٹمی دھماکہ

یہ ایٹمی دھماکہ بلاوجہ بے مقصد نہیں ہے
یہ اس کا جواب ہے جو دشمنِ ملک و دین ہے
دشمن کے سینے پہ بیٹھ گئی ہے دھاک اپنی
یہ فتح مبیں فتح مبیں، فتح مبیں ہے
یہ آزادی کا گھر نعمت عظمیٰ ہے خدا کی
یہ ارضِ حسیں، ارض حسیں، ارض حسیں ہے
یہ چمن اپنا ہے اسکی بہاریں اپنی ہیں
دنیا میں اس کی مثال کہیں اور نہیں ہے
اسے ہم پھول کہتے ہیں اسے ہم چاند کہتے ہیں
یہ مریخ ہے عطارد ہے یہ زہرہ جبیں ہے
سعید آئیں مل کر اسے تعمیر کریں پھر سے
جنت جسے کہتے ہیں یہ ملک حسیں ہے
(احمد سعید خان سعید)