آئی ایس آئی کے مقابلہ میں راما کا قیام

مکرمی! افغان حکومت نے سی آئی اے و بھارتی خفیہ ایجنسی را اور روسی ایجنسی کے جی بی کے تعاون سے ایک نئی انٹیلی جنس ایجنسی قائم کرلی ہے جس کو تربیت فراہم کرنے میں امریکہ‘ بھارت اور روس کی خفیہ ایجنسیاں پیش پیش ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ یہ ایجنسی پاکستان کے قومی سلامتی کے انتہائی تربیت یافتہ ادارے آئی ایس آئی کے مقابلے میں بنائی گئی ہے اور اس کا مقصد پاکستان کو اندرونی طور پر عدم استحکام کا شکار کرنا ہے۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ خاد سے وابستہ کئی اعلیٰ روسی افسر اور بھارتی ایجنسی را کے افسران اور اہلکاروں کو افغانستان کے علاقے نورستان کے نوم گاﺅں میں تربیت دے رہے ہیں جہاں انہوں نے باقاعدہ ٹریننگ کیمپس قائم کررکھے ہیں۔ یاد رہے نئی افغان ایجنسی کا ہیڈکوارٹر جبل السراج میں بنایا گیا ہے جو کہ احمد شاہ مسعود کا بھی ہیڈکوارٹر تھا۔ گمان غالب یہی ہے کہ بھارتی خفیہ ایجنسی را پاکستان میں اس افغان ایجنسی کو پاکستان میں تخریب کاری کی کارروائیوں کیلئے استعمال کریگی کیونکہ فنڈنگ کا ایک بڑا حصہ وہ خود فراہم کررہی ہے۔ دوسری طرف افغان حکام کا کہنا ہے کہ یہ ایجنسی دہشت گردی کے خاتمہ اور افغانستان کی قومی سلامتی کیلئے قائم کی گئی ہے۔ درحقیقت صہیونی طاقتیں ایک عرصے سے پاکستان کی سکیورٹی ایجنسی آئی ایس آئی پر شب خون مارنے کیلئے تانے بانے بنتے چلی آرہی ہیں جس کی وجہ یہ ہے کہ افغانستان پر روسی جارحیت کے دوران امریکہ نے آئی ایس آئی کی عمدہ کارکردگی اور عملی مہارت کا بہت قریب سے مشاہدہ کیا تھا ریکارڈ گواہ ہے کہ افغانستان میں آئے روز امریکی بمبار طیاروں کو مار گرایا جا رہا ہے اور اتحادی فوجوں پر تابڑ توڑ حملے ہورہے ہیں۔ ایسے میں اپنی ناکامیوں‘ کمزوریوں اور بودی حکمت عملی پر پردہ ڈالنے کیلئے صہیونی قوتیں آئی ایس آئی کو ہدف تنقید بنا رہی ہیں۔ (ایم اے شیدا۔ لاہور چھاﺅنی‘ 042-36680874)