جب تک نہ کٹ مروں خواجہ یثرب کی حرمت پر

مکرمی! آزادی رائے کی اظہار کی آڑ میں یہودی و عیسائی اپنے مذموم مقاصد کی تکمیل کر رہے ہیں اور مسلمانوں کی حرمت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے بارے میں جذبات کو جانچ رہے ہیں اُنہیں یقین ہے کہ مسلم اُمہ کے حکمران تو بے غیرت ہو چکے ہیں باقی اُمہ ہیں حرمت رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی کتنی تڑپ موجود ہے کسی ایک مسلم حکمران بشمول ہمارے نام نہاد حکمرانوں و لیڈروں کے کسی ایک نے بھی ہلکا سا احتجاج بھی نہیں کیا اور ہمارے لئے یہ لمحہ فکریہ ہے کہ یہ عوام کے اعمال کے نتیجے میں ہی ایسے حکمران ہم پر مسلط ہیں۔ یہاں تک کہ پی ٹی اے کے چیئرمین نے ارشاد کیا ہے کہ فیس بُک کی بندش سے ہماری معیشت کو نقصان پہنچے گا۔ ”آپ کا ارشاد مبارک ہے کہ ”جب تک میں تمہیں تمہارے ماں، باپ، بہن بھائی، اولاد بیوی سب حتٰی کہ جان سے بھی عزیز نہ ہو جاﺅں تمہارا ایمان کامل نہیں ہو سکتا“۔ تف ہے بے غیرتوں پر کہ اس قدر سرمایہ دارانہ ذہن ہو گیا ہے اور یہی اغیار چاہتے ہیں۔ ہمیں ان سب گستاخ ممالک کی مصنوعات کا مکمل بائیکاٹ کر دینا چاہئے صرف مذمتی قراردادیں منظور نہ کریں عمل کریں۔ بے حیثیت ایک مسلم اُمہ و پاکستانی قوم ہمارے اندر یہ صلاحیت بدرجہ اتم موجود ہے کہ ہم بھی ہر نئی چیز ایجاد کر سکتے ہیں اور بنا سکتے ہیں ہم کسی سے کم نہیں یہ سب ایجاد کردہ چیزوں کی بنیاد ہمارے مسلم سائنسدانوں نے رکھی تھی کسی کا دست نگر ہونے سے بہتر ہے کہ اپنے قوت بازو پر بھروسہ کریں اور دشمنانِ اسلام کو بتا دیں کہ ہم سچے اور پکے عاشق رسول ہیں۔ (انیلہ اجمل 383۔ طارق بلاک نیو گارڈن ٹاﺅن لاہور)