اشفاق پرویز کیانی کی نوازشریف سے ملاقات

مکرمی! جمعہ کے روز مسلح افواج کے سربراہ جنرل اشفاق پرویز کیانی نے مستقبل کے وزیراعظم میاں محمد نوازشریف سے ماڈل ٹاو¿ن میں ملاقات کی۔ اس ملاقات میں پاک بھارت تعلقات 2014ءمیں امریکی فوج کے انخلائ، ڈرون حملوں اندرونی اور بیرونی سطحوں پر ملک کی سلامتی کو درپیش چیلنجوں سمیت دیگر امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ اس موقع پر مسلح افواج کے سربراہ نے دہشت گردی کے خلاف جنگ اور سیکیورٹی امور پر تفصیل سے بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ کراچی بلوچستان اور خیبر پی کے کے حالات زیادہ توجہ کے متقاضی ہیں۔ انہوں نے اہم قومی امور پر اتفاق رائے کی ضرورت پر زور دیا تاکہ کڑے چیلنجوں سے نمٹا جا سکے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاک فود جمہوریت کی مضبوطی اور تسلسل پر پورا یقین رکھتی ہے۔ اس موقع میاں محمد نوازشریف نے پرامن انتخابات کے انعقاد اور دہشت گردی کے خلاف جنگ میں فوج کی قربانیوں کا ذکر کرتے ہوئے انہیں خراجِ تحسین پیش کیا۔ انہوں نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ ملک کی سلامتی کو جن خطرات کا سامنا ہے ان سے نمٹنے کے لئے وہ تمام ریاستی اداروں کو ساتھ لے کر چلیں گے اور ملک کی سلامتی اور خودمختاری پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔ مبصرین نے نواز کیانی کی اس ملاقات کو سول ملٹری تعلقات کے حوالے سے اہم پیش رفت قرار دیا ہے اور اُمید ظاہر کی ہے کہ اس کے مستقبل پر بہت مثبت اور خوشگوار اثرات مرتب ہوں گے۔ ایک ایسے وقت میں جبکہ نو منتخب حکومت حلف اٹھانے کو ہے اور زورآوروں نے پورے ملک کو یرغمال بنا رکھا ہے۔ یہ ملاقات ایک سنگِ میل کی اہمیت رکھتی ہے جس سے ترقی اور خوشحالی کے نئے دور کاآغاز ہو گا۔(کامران نعیم صدیقی لاہور)