کامیاب حکومت کی ضامن، انصاف

مکرمی!21-5-2010 نوائے وقت کی سرخی”ملک کے اندر یا باہر سوئس مقدمات کہیں نہیں کھولے جا سکتے ،گیلانی“ سوئس مقدمات کھلیں نہ کھلیں۔ رحمان ملک کے بارے بھی رہا افہام و تفہیم کا تو اسی پرمنحصر ہے مقدر ملک عزیز کا۔عصانہ ہو تو کارکلیمی ہے بے بنیاد، کوبروئے کار لانا عین منشائے فطرت ہوگا۔’ سب تدبیرڈنڈا پیر‘ یونہی تو بے بدل نہیں ہے۔ ہمیں بھی جمہوریت اور انصاف دونوں میں سے ایک کا انتخاب کرنا ہوگا۔قرآن میں انصاف کو تقویٰ کے قریب ترین کہا گیا اور تقویٰ کو عزت کے اعلیٰ ترین مقام پر لے جایا گیا۔ جبکہ جمہوریت اکثریت کی حکومت کو کہتے ہیں۔ قرآن میں اکثریت کو لایعلمون اور لایعقلون کہا گیا ہے۔ قارئین اس فرق کو ملحوظ رکھیں۔ کوئی بھی طریقہ حکومت ہو، کامیاب کا ضامن انصاف ہے۔(معین الحق 042-5164587)