شہباز شریف اگرتوجہ دے سکیں ایک وضاحت!

مکرمی! نوائے وقت کی اشاعت مورخہ 22 مئی میں ”شہباز شریف اگر توجہ دے سکیں“ کے عنوان سے جو مراسلہ شائع ہوا ہے اس میں چند سطریں کمپوز نہیں ہو سکیں جس سے مفہوم واضح نہیں ہو رہا۔ جو یوں ہیں ”کنڈیکٹر نے گرین ٹاون سے شملہ پہاڑی کا کرایہ 25 روپے طلب کیا اور جب اسے کہا گیا کہ 19 مئی کی رات 10 بجے تک تو یہ کرایہ 22 روپے وصول کیا جاتا رہا ہے۔ 20 مئی کی صبح کو 25 روپے کیسے ہو گیا تو کنڈیکٹر فوراً بدتمیزی پر اتر آیا ”زیادہ گلاں نہ کر 25 روپے کڈ“ بس میں موجود چیکر نے بھی کنڈیکٹر کا ساتھ دیا بلکہ دیدہ دلیری کا مظاہرہ کرتے ہوئے میرے ٹکٹ پر بس کا نمبر لکھ کر کہا ”جا جس سے کہنا ہے کہہ دے“ اس عاجز نے اس سے کہا تھا وہ اس بدتمیزی کا معاملہ سیال صاحب ‘ ارشد نیازی اور نسیم نورانی صاحب کے نوٹس میں لائے گا۔ (اسرار بخاری کالم نگار (براہ راست) 0333-4236581)